Advertisement

متفرق ادبی لطائف

May 15, 2019
 

تخلّص کے بارے میں ایک لطیفہ

مشہور مزاح گو شاعر احمق پھپھوندوی ایک مشاعرے میں بلائے گئے جس میں بہت سے شاعر ان کے ناپسندیدہ تھے ۔ انہوں نے اپنے تخلص کا سہارا لے کر ان پر یہ چوٹ کی:

ادب نوازیِ اہلِ ادب کا کیا کہنا

مشاعروں میں اب احمق بلائے جاتے ہیں

لیلٰی گورکھ پوری

برسات کا موسم تھا۔ یونیورسٹی میں چاروں طرف گھاس اُگ آئی تھی۔ گھسیارے گھاس کاٹنے میں جتے ہوئے تھے۔

ممتاز شاعر ،پروفیسر مجنوں گورکھ پوری کی کلاس جاری تھی۔ ایک گھسیارن کلاس کے سامنے والے برآمدے سے گزری۔ طلبا کی نظریں لا محالہ اس کی طرف اٹھیں۔ مجنوں نے بھی اس جانب دیکھا اور بے ساختہ بولے:

’’یہ کون ہے؟‘‘

ایک گوشے سے آواز آئی۔۔۔۔۔’’لیلٰی گورکھ پوری‘‘۔

یہ سننا تھا کہ سارے کلاس میں قہقہے گونجنے لگے۔


مکمل خبر پڑھیں