Advertisement

شادی کا جھانسہ دیکر 15 سالہ یتیم لڑکی سے نوجوان کی زیادتی

June 30, 2019
 

حیدرآباد ( بیورو رپورٹ) شادی کا جھانسہ دیکر 15 سالہ یتیم لڑکی سے نوجوان کی زیادتی‘ لڑکی کے حاملہ ہونے پر ملزم فرار‘ والدہ انصاف کے لئے تھانے پہنچ گئی‘ انسانی حقوق کی تنظیموں کی مداخلت پر قاسم آباد پولیس نے ملزم لالو بھیل جس نے خود کو قبل ازیں مسلمان ظاہر کیا تھا کے خلاف جنسی زیادتی کے الزام میں مقدمہ درج کرلیا ہے۔ وومین شکا یتی سیل حیدرآباد کی انچارج قرۃ العین نے نسیم نگر کی رہائشی 15 سالہ شازیہ خاصخیلی بنت غلام شبیر کی والدہ خالدہ کی جانب سے شکایت پر جس میں کہا گیا تھا کہ ایک شادی ہال کے چوکیدار لالو نے خود کو مسلمان ظاہر کرکے بیٹی کو شادی کا جھانسہ اور ورغلا کر دوستی کرلی اور 20 مئی 2019 ءکو گلاب کھوسو کے نام سے نکاح بھی کرلیا اور مسلسل جنسی زیادتی کرتا رہا جس کے باعث وہ حاملہ ہوگئی اس دوران لالو بھیل غائب ہوگیا‘ شادی ہال کے سپروائزر عنایت لغاری سے رابطہ کیا تو اس نے کہا کہ گلاب کھوسو نامی کوئی شخص ان کا ملازم نہیں ۔بلکہ ان کے چوکیدار کا نام لالو بھیل ہے جس کے بعد لالو بھیل سے رابطے کی کوشش کی تو ا س نے دھمکیاں دیں اور خاموش رہنے کے لئے کہا‘ گذشتہ شب وومین کمپلین کی مداخلت پر قاسم آباد پولیس نے نامزد لالو بھیل کے خلاف مقدمہ درج کرلیا تاہم کوئی گرفتاری عمل میں نہیں آئی ہے جبکہ میڈیا کے رابطے پر ملزم لالو کا کہنا ہے کہ اس نے شادی نہیں کی ،اسے پھنسانے کے لئے ڈرامہ کیا جارہا ہے جبکہ متاثرہ لڑکی شازیہ کی والدہ کا کہنا ہے کہ میری بیٹی سے شادی کا لالچ دیکر زیادتی کی گئی ہے ۔ وومین کمپلین سیل کی انچارج قرۃ العین شاہ نے کہا کہ ملزم نے دھوکہ دیکر خود کو مسلمان ظاہر کرکے مسلمان لڑکی سے شادی کا ڈرامہ کرکے زیادتی کی ہے اسے انصاف ملنا چاہئے۔


مکمل خبر پڑھیں