| |
Home Page
بدھ 24 ربیع الاوّل 1439ھ 13 دسمبر2017ء
November 23, 2017 | 08:48 pm

دو نیب ریفرنسز یکجا کرنے کی درخواستوں پر فیصلہ محفوظ

Save Decisions On Combining Two Nab References

Save Decisions On Combining Two Nab References

اسلام آباد ہائیکورٹ نے نواز شریف کی 2 نیب ریفرنسز یکجا کرنے کی درخواستوں پر فیصلہ محفوظ کر لیا، نیب پراسیکیوٹر اور عدالت کے درمیان مکالمے میں نواز شریف کے وکیل کی مداخلت پر بحث بھی چھڑ گئی ۔

نواز شریف کی جانب سے فلیگ شپ اور ہل میٹل ریفرنسز کو یکجا کرنے کی درخواست پر سماعت کے دوران آج اسلام آباد ہائیکورٹ میں گرما گرم بحث ہوئی، جس کے دوران نواز شریف اور نیب کے وکلاء میں تلخ جملوں کا تبادلہ ہوا۔

جسٹس عامر فاروق اور محسن اختر کیانی کے روبرو نواز شریف کے وکیل اعظم نذیر تارڑ نے اپنے دلائل میں کہا کہ احتساب عدالت نے ہائیکورٹ کے تفصیلی فیصلے کا انتظار کیے بغیر درخواستیں خارج کر دیں۔

نواز شریف کے وکیل نے کہا کہ فلیگ شپ اور ہل میٹل ریفرنس میں الزام، ملزم اور گواہ مشترک ہیں۔

اس کے جواب میں عدالت نے ریمارکس دیئے کہ ایک جرم اور ایک جیسے جرم کو آپ ایک نہیں کہہ سکتے، آرٹیکل 13 کا مینڈیٹ کچھ اور ہے اسے مکس نہ کریں۔

نیب پراسیکیوٹر سردار مظفر نے مؤقف اختیار کیا کہ تینوں ریفرنسز میں گواہوں کے بیانات ریکارڈ کرنے کا سلسلہ جاری ہے، ریفرنسز یکجا کرنے کی درخواست غیرمؤثر ہو چکی ہے۔

اس پر جسٹس محسن اختر کیانی نے کہا کہ پھر تو ٹرائل کورٹ کو کارروائی سے روک دینا چاہئےجس پر عدالت نے فریقین کے دلائل مکمل ہونے پر فیصلہ محفوظ کر لیا۔