| |
Home Page
اتوار یکم جمادی الثانی 1439ھ 18 فروری 2018ء
February 10, 2018 | 03:51 am

رابطہ کمیٹی کے فیصلے غیرآئینی ہیں، فاروق ستار کا شوکاز دینے کا اعلان

Farooq Sattar To Give Show Cause Calls Workers Meeting On Sunday

Farooq Sattar To Give Show Cause Calls Workers Meeting On Sunday

ایم کیو ایم پاکستان کے سر براہ فاروق ستار نے رابطہ کمیٹی کے ارکان کو آج شو کاز نوٹس بھیجنے کا اعلان کرکے اتوار تک کی مہلت دے دی اور بولے کہ اب آئینی جنگ ہوگی جبکہ تمام اجلاس اور فیصلے غیر آئینی قرار دے دیئے۔

یہ بات فاروق ستار نے اپنی رہائش گاہ کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہی اور ساتھ ہی انہوں نے اتوار کی سہ پہر4 بجے جنرل ورکرز اجلاس بلا لیا۔

ان کا کہنا تھا کہ اپنی سر براہی سے متعلق فیصلہ بھی اسی اجلاس میں کروں گا اور یہ سب اس لیئے ہورہا ہے کہ میرے پاس وہ ڈنڈا نہیں جو بانی ایم کیو ایم کے پاس تھا ۔

فاروق ستار نے یہ بھی کہا کہ آج صبح الیکشن کمیشن کو خط لکھ کر رابطہ کمیٹی کا بھیجا گیا خط مسترد کرنے کا کہوں گا کیونکہ یہ خط مجھ پر عدم اعتماد ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ میرے اختیارات پر شب خون مارا گیا، پیٹھ پر وار کیا گیا، کارکنان باہر نکلیں اور پارٹی بچائیں جبکہ رابطہ کمیٹی اور بہادر آباد دفتر پر چند افراد قبضہ کر کے فیصلے کر وا رہے ہیں

اس سے پہلے رابطہ کمیٹی نے الیکشن کمیشن کوخط لکھا تھا کہ سینیٹ کے امیدواروں کو ٹکٹ دینے کا اختیار ڈپٹی کنوینر خالد مقبول صدیقی کو دے دیا ہے اورساتھ ہی انہوں نے امیدواروں کی منظوری بھی دے دی تھی ۔

اس کے ردعمل میں فاروق ستار کا کہنا تھا کہ رابطہ کمیٹی کا الیکشن کمیشن کو خط مجھ پر عدم اعتماد کا ثبوت ہے، اب وہ کس منہ سے بہادر آباد جائیں ؟جبکہ بلی تھیلے سے باہر آگئی ہے۔

انہوں نے یہ بھی کہا کہ بہادرآباد گروپ کی رابطہ کمیٹی نے حیدر عباس کے دستخط کینیڈا سے منگوائے جبکہ خواجہ اظہار نے سائن نہیں کیے۔

انہوں نے بتایا کہ اب ثالثی کمیٹی کو تجویز دی ہے اس پر عمل درآمد ہو جاتا ہے تو رابطہ کمیٹی کا اجلاس طب کر کے چلا جاؤں گااور ان کے جواب کا منتظر ہوں۔