| |
Home Page
پیر2 ؍ جمادی الثانی 1439ھ 19؍ فروری 2018ء
February 10, 2018 | 01:01 pm

چیف جسٹس نے صاف پانی کیس پر وزیراعلیٰ پنجاب کو فوری طلب کر لیا

Chief Justice Asked The Chief Minister Punjab Immediately On A Clean Water Case

Chief Justice Asked The Chief Minister Punjab Immediately On A Clean Water Case

چیف جسٹس پاکستان نے صاف پانی کیس میں وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف کو فوری طور پر سپریم کورٹ لاہور رجسٹری میں طلب کر لیا۔

سپریم کورٹ لاہور رجسٹری میں صاف پانی فراہمی سے متعلق کیس کی سماعت کے دوران عدالتی معاون عائشہ حامد نے رپورٹ عدالت میں پیش کی جس میں انکشاف کیا گیا کہ 540 ملین گیلن گندہ پانی راوی میں ڈالا جارہا ہے ۔

اس انکشاف کے بعد چیف جسٹس پاکستان جسٹس ثاقب نثار نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ لاہور صوبائی دارالحکومت ہے، یہ تخت لاہور ہے ،پنجاب کا دل ہے اس کے ساتھ کیا سلوک کیا جا رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ حیرانگی کی بات ہے کہ لاہور کی یہ صورتحال ہے تو باقی شہروں کی کیا ہوگی۔

اس موقع پر چیف جسٹس نے فوری طور پر احکامات جاری کرتے ہوئے خادم اعلیٰ پنجاب کو فوری طور پر سپریم کورٹ میں پیش ہونے کے احکامات جاری کردیئے اور کہا کہ خادم اعلیٰ سے پوچھ کر بتایا جائے کہ وہ کب تک پیش ہو سکتے ہیں۔ عدالت نے پنجاب حکومت کی جانب سے پیش کی گئی رپورٹ پر بھی عدم اطمینان کا اظہار کیا۔

چیف جسٹس کا کہنا تھا کہ وزیراعلیٰ پنجاب یہاں آئیں اور وضاحت پیش کریں کہ گندے پانی کی نکاسی کے لیے کیا اقدامات کیے جا رہے ہیں۔

جسٹس ثاقب نثار کے کہا کہ آلودگی کے معاملے پر وزیر اعلیٰ سندھ کو طلب کر سکتے ہیں تو پنجاب کو کیوں نہیں۔