• بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

معروف بھارتی رقاصہ اور ڈانس شو کی جج گیتا کپور کا کہنا ہے کہ انہیں اپنے ڈانس ریئلیٹی شو میں بطور جج ابتدائی دنوں میں  اپنے فربہ جسم کی وجہ سے کافی شرمندگی کا سامنا کرنا پڑتا تھا۔

یاد رہے کہ انہوں نے 2008ء میں بطور کوریو گرافر، ڈانس شو انڈیا ڈانس سے اپنے ٹیلی ویژن کیریئر کا آغاز کیا تھا اور پروگرام کے پہلے  سیزن میں وہ بطور جج شریک ہوئیں جہاں ان کے ساتھ پینل میں کوریو گرافرز ریمو ڈیسوزا اور ٹیرنس لیوس شریک تھے۔

گیتا کپور کا کہنا ہے کہ انہیں ان دنوں ای میلز ملا کرتے جس میں بہت سخت جملے لکھے ہوتے تھے اور ان سے کہا جاتا تھا کہ وہ جج بننا چھوڑ دیں کیونکہ وہ بھینس جیسی موٹی ہیں۔

انہوں نے کہا کہ ایک دن تو وہ کافی دل برداشتہ تھیں کہ یہ سب کیا ہورہا ہے، لوگ میرا کام کیوں نہیں دیکھ رہے، میں دو مردوں کے درمیان میں بیٹھ کر اپنی جگہ بنانے کی کوشش کررہی تھی لیکن کوئی بھی یہ نہیں دیکھ رہا تھا۔

ان کا کہنا تھا کہ یہ ٹھیک ہے کہ میرے دونوں جانب بیٹھے حضرات کافی اچھی وضع قطع اور جسمانی معیار کے تھے اور مجھے سب کہتے کہ موٹی بھینس ہوگئی یہاں کیوں بیٹھی ہو؟

انٹرٹینمنٹ سے مزید