آپ آف لائن ہیں
جنگ ای پیپر
منگل17؍شعبان المعظم 1440ھ 23؍ اپریل 2019ء
Namaz Timing
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

تعلیمی اداروں میں انتہاپسندی کی روک تھام ، جامعات کے وائس چانسلزسی ٹی ڈی طلب

Vice Chancellor Td Demanding Universities To Prevent Extremism In Educational Institutions

سندھ کے اعلیٰ تعلیمی اداروں میں انتہاپسندی کی روک تھام کیلئے سی ٹی ڈی سندھ نے صوبے کی 11 جامعات کے وائس چانسلز کو بریفنگ کیلئے طلب کرلیا ہے۔

سی ٹی ڈی سندھ کے سربراہ ڈاکٹر ثناء اللہ عباسی نے ’جنگ ‘ کو بتایا کہ اجلاس ان کی صدارت میں 12 جولائی کو بلایا گیا ہے۔

کراچی یونیورسٹی، اقراء یونیورسٹی، ہمدرد یونیورسٹی، نیشنل انسٹیٹیوٹ آف کمپیوٹر اینڈ ایمرجنگ سائنسسز یونیورسٹی، آئی بی اے، بحریہ یونیورسٹی کراچی کیمپس، فیڈرل یونیورسٹی کراچی کیمپس، جناح یونیورسٹی فار وومن، کسب انسٹیٹیوٹ آف ٹیکنالوجی، محمد علی جناح یونیورسٹی اور سرسید یونیورسٹی کے وائس چانسلرز کو خطوط جاری کردیئے گئے ہیں۔

ان 11 وائس چانسلرز کو 12 جولائی کی شام 4 بجے سی ٹی ڈی آفس اولڈ سرکٹ ہاوس طلب بلایا گیا ہے۔

ثناء اللہ عباسی کے مطابق دہشت گردی میں حیدرآباد کی طالبہ نورین لغاری اور سعد عزیز سمیت کئی طلبہ کے کردار کے بعد تعلیمی اداروں میں انتہاپسندی روکنے کیلئے یہ فیصلہ کیا گیا ہے۔

ان کا کہنا ہے کہ انتہاپسندی روکنے کیلئے وائس چانسلرز سے بھی تجاویز لیں گی اور دہشت گردی روکنے کیلئے اس اجلاس میں باہمی مشاورت سے لائحہ عمل طے کیا جائے گا۔

ثناء اللہ عباسی کے مطابق آئندہ بھی اس طرح کے اجلاس ہوتے رہیں گے۔

Chatاپنی رائے سے آگاہ کریں