آپ آف لائن ہیں
جمعرات9؍ محرم الحرام 1440ھ20؍ ستمبر 2018ء
Namaz Timing
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

س۔السلام علیکم! عابدی صاحب!میں ہر جمعرات کو آپ کا کالم باقاعدگی سے پڑھتا ہوں۔ میں بی ایس بائیو ٹیکنالوجی ساتویں سمسٹر کا طالب علم ہوں ۔میرا CGPA 2.80ہے اور میں ایم ایس کی انٹرنیشنل اسکالر شپ کی معلومات لینا چاہتا ہوں۔ مجھے بتائیں کہ میں اپنے اس کم CGPAکے ساتھ کیسے اسکالرشپ حاصل کرسکتا ہوں۔میں بائیوٹیکنالوجی میں کس اسپیشلائزیشن کا انتخاب کروں۔ میں آپ کا شکرگزار رہوں گا۔(ایم عدیل ڈیٹا۔رحیم یار خان)
ج۔ڈیئر عدیل، ہاں میں متفق ہوں کہ آپ کا سی جی پی اے اسکالرشپ حاصل کرنے کے لئے بہت کم ہے. تاہم، آپ اپنی ڈگری کو مکمل کرنے اور اپنے آخری ٹرانسمیشن کو حاصل کرنے کے بعد مختلف ممالک میں جزوی طور پر جزوی اسکالرشپ تلاش کر سکتے ہیں. یہ ممکن ہے کہ اگر آپ محنت سے کام کریں تو، آپ اپنے CGPA کو 3.0 سے آگے بڑھا سکتے ہیں جس میں آپ جرمنی میں پبلک سیکٹر یونیورسٹی میں داخلہ لینے کے قابل ہو سکتے ہیں جس کا مطلب ہے کہ آپ کوٹیوشن مفت ہے اورصرف مالی مدد کے ثبوت فراہم کر کے آپ ماسٹر ڈگری میں داخلہ لےسکتے ہیں،جس میںبایو ٹیکنالوجی اور بائیوسائنسز میں نئے شعبوں میں بائیوانفارمیٹکس، بائیو سسٹم اور سائنس، بائیو ٹیکنالوجی، حیاتیاتی ٹیکنالوجی وغیرہ شامل ہیں۔یہ سب بین الاقوامی مارکیٹ میں کافی ترقی یافتہ مواقع ہیں۔
س۔السلام

علیکم سر! میرا نام اسامہ ملک ہے اور میں اپنے مستقبل کے حوالے سے آپ سے مشورہ لینا چاہتا ہوں ۔ میرا تعلق لیہ سے ہے اور میں نے میٹرک اور ایف ایس سی میں 90%سے زیادہ نمبر حاصل کئے ہیں۔ اب میں سکھر میں IBAکررہاہوں۔ اس پہلے سمسٹر سے پہلے میں اپنی فیلڈ انجینئرنگ یا بزنس کا انتخاب کرسکتا ہوں۔مجھے آپ کا مشورہ چاہئے۔(اسامہ ملک۔لیہ)
ج۔محترم مسٹر ملک، انجینئرنگ یا کاروبار کا مطالعہ کرنے کا فیصلہ خاص طور پرآپ کی دلچسپی اور کیریئر کے انتخاب پر منحصر ہوتاہے۔جہاں تک میں دیکھتا ہوں آپ نے واضح طور پر ثابت کیا ہے کہ آپ ریاضی، فزکس اور کیمسٹری میں مضبوط اوراعلیٰ سطحی طالب علم ہیں۔اگر آپ سوچتے ہیں کہ انجینئرنگ میںآپ کی دلچسپی ہے۔میں آپ کو سافٹ ویئر انجینئرنگ، حیاتیاتی ٹیکنالوجی یا الیکٹرانکس اور ٹیلی کام کامشورہ دونگا۔جہاں تک مینجمنٹ کا تعلق ہے، آپ کو یہ سوچنے کی ضرورت ہے کہ سائنس کا کون سا مضمون آپ کو پروفیشنل کیریئر کیلئے منتخب کرنا چاہتے ہیں۔اگر آپ ریاضی میں اچھے ہیں تو واضح انتخاب اکاؤنٹنگ اور فنانس ہوگا۔میں امید کرتا ہوں کہ آپ میرے نقطہ نظر کو سمجھتے ہیںاور جب تک کہ میں آپ سے بات نہ کرلوں۔
س۔میرا نام توفیق اللہ خان ہے۔ میں نے آج جیو نیوز پر آپ کا انٹرویو دیکھا جس میں آپ کیریئر کونسلنگ کے حوالے سے طالب علموں کی رہنمائی فرماتے ہیں۔میری بیٹی نے پی اے ایف کیٹ میں ایوی ایشن مینجمنٹ میں داخلہ لیا ہے اس کے بعد وہ پاکستان فورس میں جانا چاہتی ہے۔ براہِ مہربانی کچھ رہنمائی فرمائیں۔ (محمد توفیق اللہ خان ۔ کراچی)
ج۔محترم مسٹر توفیق، آپ کے ای میل کا شکریہ۔ ایوی ایشن مینجمنٹ ایک اہم اور ابھرتا ہوا مضمون ہے۔تاہم میں اس بارے میںیقین سے نہیں کہہ سکتا کہ آپ کی بیٹی کا داخلہ پاکستان فورس میںہوجائے گاکہ نہیں۔ آپ ایئر فورس یا ہوائی اڈے کی سیکورٹی فورس کے بارے میں سوچ رہے ہیں؟ تاہم، مجھے لگتا ہے کہ فلائی انڈسٹری، ایئر لائنز اور ایسوسی ایٹ ایجنسیوں میں ایوی ایشن مینجمنٹ میں بہت سے کیریئر کے مواقع حاصل ہوں گے جو ایوی ایشن مینجمنٹ کے حصے میں کام کرتے ہیں۔
س۔میرے بیٹے نے اپنی ماسٹر ڈگری پروفیشنل اکائونٹنگ آسٹریلیا سے مکمل کی ہے اوراس نے ایم بی اے فنانس پاکستان سے کیا ہے۔ اب وہ آسٹریلیا کی شہریت اختیار کرنا چاہتا ہے۔براہِ مہربانی اس کو مزید تعلیم کیلئے رہنمائی فرمائیں جو کہ مستقبل میں اس کیلئے بہتر ثابت ہو۔(محمد امجد عباسی۔مری)
ج۔محترم مسٹر امجد، مجھے لگتا ہے کہ آپ کے بیٹاکو ایسے پروفیشنل کیریئرز کے بارے میں کافی علم ہوگا۔جنہیں آسٹریلیا میں سکونت / شہریت حاصل کرنے کیلئے اولین ترجیح دی جاتی ہے اورچونکہ وہ وہاں پڑھتارہا ہے وہاں کی شہریت /پی آرحاصل کرنے کی درخواست دینے کے لئے ضروریات سے واقف ہوگااور جہاں تک ان کے مزید مطالعہ کرنے کا تعلق ہے تو میںسمجھتاہوں کہ وہ نوکری ڈھونڈکر کچھ متعلقہ تجربہ حاصل کرے جو کسی بھی فنانشل ادارے یا بین الاقوامی ادارے میںہوسکتی ہے۔جس کے بعد وہ اپنی اگلی قابلیت یا مطالعہ کے لئے مزید مہارت حاصل کرنے میں کامیاب ہوسکتا ہے۔ میرے خیال میں اس کا اب تک کا پورٹ فولیو کافی مناسب ہے۔ میری نیک تمنائیں اس کےساتھ ہیں۔

Chatاپنی رائے سے آگاہ کریں