آپ آف لائن ہیں
جمعرات 8؍رمضان المبارک 1439ھ24؍مئی 2018ء
Namaz Timing
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
کراچی (اسٹاف رپورٹر)ماہر متعدی امراض ڈاکٹر نسیم صلاح الدین نے کہا ہے کہ ہیپاٹائٹس ایک موذی مرض ہے جس کا وائرس امراض جگر کا باعث بنتا ہےاور جگر کے کینسر تک میں مبتلا کر دیتا ہے جو انسانی جان لے لیتا ہے ۔تاہم یہ قابل علاج ہے اوراگر احتیاط کی جائے تو اس سے محفو ظ رہا جاسکتا ہے ۔ان کا کہنا تھا کہ انسانی جگر انسان کو کئی طریقوں سے صحت مند رکھتا ہے یہ خون سے ٹاکس نکال دیتا ہے اور غذائی اجزاء کو توانائی میں تبدیل کرتا ہے تاہم ہیپٹائٹس کا وائرس جگر کو ناکارہ کردیتا ہے ۔ہیپاٹائٹس کی کئی اقسام ہیں جن میں اے ، بی ، ای اور سی شامل ہیں تاہم سب سے خطرناک ہیپٹائٹس بی اورسی ہیں جو زیادہ تر استعمال شدہ سرنج ،متاثرہ خون لگنے ، استعمال شدہ بلیڈ استعمال کرنےاور آپریشن کےمتاثرہ اوزار لگنے سےخون کے ذریعے منتقل ہوتے ہیں ۔انہوں نے بتایا کہ پاکستان دنیا کا واحد ملک ہے جہاں سب سے زیادہ انجیکشن استعمال کیے جاتےہیں جس کی بڑی وجہ عوام کا انجیکشن لگانے پر اصرار کرنا ہے تاہم انجیکشن میں گندی اور استعمال شدہ سوئی استعمال کی جاتی ہے جس کے ذمہ دار ڈاکٹرز، نرسز، پیرامیڈیکس اور اتائی ہیں جس سے ہیپاٹائٹس کا مرض ملک میں اس قدر تیزی سے پھیلتا جارہا ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ عموماً مریضوں کو اس مرض کا پتہ نہیں چلتا جو آہستہ آہستہ جگر کو

x
Advertisement

ناکارہ کردیتا ہے۔

​​
Chatاپنی رائے سے آگاہ کریں