آپ آف لائن ہیں
جنگ ای پیپر
پیر 12؍صفر المظفّر 1440ھ 22؍اکتوبر2018ء
Namaz Timing
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
’’دہشتگردی کیخلاف جتنا کام ہونا چاہیے تھا نہیں ہوا‘‘

پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری کہتے ہیں کہ دہشت گردی کے خلاف جتنا کام ہونا چاہیے تھا نہیں ہوا، انتہا پسندی اور دہشت گردی کا سلسلہ پھر سے سامنے آ رہا ہے، اداروں کو مضبوط نہیں بنائیں گے تو عوام کے مسائل حل نہیں ہو سکیں گے، حکومت بنا کر سب کو ایک پیج پر لاؤں گا۔

پشاور میں بلاول بھٹو زرداری نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے مزید کہا کہ افسوس کی بات ہےانتہا پسندی اور دہشت گردی کا آج تک حل نہیں نکال سکے، سانحہ مستونگ کے بعد مالا کنڈ کا جلسہ منسوخ کر دیا، ہارون بلور کی شہادت کے بعد اظہار یکجہتی کے طور پر جلسہ ملتوی کیا، مالا کنڈ جاؤں گا اورکارکنوں سے ملوں گا۔

قومی خبریں - عمران کو جانے دیا، بلاول کو روک لیا - Latest News

پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری کے جہاز کو لاہور کے علامہ اقبال انٹرنیشنل ایئرپورٹ سے...

ان کا مزید کہنا ہے کہ انتخابی مہم میں رکاوٹیں ڈالی جارہی ہیں، مختلف مقامات پر روکا جا رہا ہے، انتخابی مہم کے لیے یکساں مواقع نہیں ملیں گے تو انتخابی نتائج متنازع بن جائیں گے،پارٹی ورکرز یا عہدیدار کام نہیں کرتے تو ان کے خلاف ایکشن لینا پڑے گا۔

بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ پی پی پی انتخابات کا کبھی بائیکاٹ نہیں کرے گی، مطالبہ ہے کہ بروقت الیکشن کرائے جائیں، انتخابات سے قبل دھاندلی کی کوشش کی جارہی ہے،سیاسی جماعتوں پر دہشت گردوں کے حملے ہو رہے ہیں، پیپلزپارٹی نے ہمیشہ مشکل حالات کا سامنا کیا ہے اور آگے بھی کرتی رہی گی اور ان تمام حالات کے باوجود الیکشن میں بھرپور حصہ لےگی۔

انہوں نے کہا کہ خیبرپختونخوا میں افسران کے تبادلے درست نہیں کیے گئے، نگراں حکومتوں کا رویہ جانبدارانہ ہے، ہمیں جگہ جگہ روکا جا رہا ہے، کارکنوں پر وفاداری تبدیل کرنے کیلئے دباؤ ڈالا گیا، پیپلزپارٹی میدان میں کھڑی ہے، سیکیورٹی صورتحال کی وجہ سے مجھے محدود رکھا جارہا ہے۔

چیئرمین پی پی پی کا مزید کہنا ہے کہ ہم بروقت اور پُرامن انتخابات چاہتے ہیں، جب سے الیکشن مہم کے لیے کراچی سے نکلا ہوں مشکلات کا سامنا کیا ہے، پیپلزپارٹی نے ہمیشہ مشکل حالات کا مقابلہ کیا آیندہ بھی کریں گے، ہمارے پارٹی ورکرز کو کہا جارہاہے کہ کٹھ پتلی جماعت میں آجاؤ،اپنے خدشات الیکشن کمیشن سمیت ہر جگہ اٹھائیں گے ،پیپلزپارٹی کے لیے عوام کا رسپانس بہت اچھا ہے۔

Chatاپنی رائے سے آگاہ کریں