آپ آف لائن ہیں
جنگ ای پیپر
بدھ4؍ربیع الثانی 1440ھ 12؍دسمبر2018ء
Namaz Timing
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

آپ کے مسائل اور اُن کا حل

سوال:۔ امریکا آنے کے بعد یہاں بہت سے لڑکے کورٹ میرج کرتے ہیں۔مقصد یہ ہوتا ہے کہ کسی نہ کسی طرح گرین کارڈ مل جائے۔ انہیں صرف دو تین سال تک رہنا ہوتا ہے،جب تک گرین کارڈ نہ مل جائے۔ اس طرح کی شادی میں نہ کوئی اعلان ہوتا ہے اورنہ ہی اسلامی طریقے سے نکاح کا اہتمام کیا جاتا ہے۔ اس کے متعلق کیا حکم ہے،کیا یہ جائز ہے؟ (اشرف کاظمی،امریکا)

جواب :۔ اگر دو عاقل وبالغ مسلمان مردوں یا ایک مرد اور دو مسلمان عورتوں کے سامنے نکاح کے لیے ایجاب وقبول کرلیا جائے تو نکاح ہوجاتا ہے۔نکاح کا علانیہ ہونا اور اس میں خطبہ ہونا اور مسجد میں اور جمعہ کے روز ہونا تو مستحب باتیں ہیں ،ان سے زیادہ ضروری یہ ہے کہ عورت مسلمان ہو یا کتابیہ ہو۔ اگر عورت مسلمان یا کتابیہ نہ ہو یا کتابیہ ہو، مگر اصل سے کتابیہ نہ ہو ،بلکہ کسی اور غیر آسمانی مذہب مثلاً بدھ مت کو چھوڑ کر کتابیہ بنی ہو یا بالکل بددین اور دہریہ ہو اور اپنے مذہبی اصولوں کو نظریے کی حد تک بھی نہ مانتی ہو تو اس سے نکاح ہی جائز نہیں اور ایسے مرد وعورت میاں بیوی بنتے ہی نہیں ہیں۔

Chatاپنی رائے سے آگاہ کریں