آپ آف لائن ہیں
جنگ ای پیپر
پیر 13؍شوال المکرم 1440ھ17؍جون 2019ء
Namaz Timing
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

سندھ بھر میں محکمہ صحت کی عدم دلچسپی کے باعث ہیپاٹائٹس سی کی سرکاری ادویات ناپید ہوگئیں،سکھر سمیت صوبے بھر میں غریب مریض ادویات ختم ہونے پر جیب سےمہنگا علاج کرانے یا پھر علاج ادھورا چھوڑنے پر مجبور ہیں ۔

وزیر اعلی پروگرام برائے ہیپاٹائٹس کے تحت ،صوبے بھر میں ہیپاٹائٹس سی کے مریضوں میںمفت فراہم کی جانے والی سرکاری ادویات گزشتہ دو ماہ سے ناپید ہونے کے باعث سکھر سمیت صوبے بھر کےسیکڑوں غریب مریض ،،پیسوں سے مہنگی ادویات خرید کرعلاج کرانے پر مجبور ہیں۔

طبی ماہرین کے مطابق جاری علاج میں وقفے سے ہیپاٹائٹس سی کا وائرس مریض کومزید متاثر کرسکتا ہے۔

ڈاکٹر افتخار شاہ کا کہنا ہے کہ ہیپاٹائٹس سی کا وائرس جگر کے کینسر کا سب سے بڑا باعث بنتا ہے،جگر کے کینسر کے علاوہ جگر کے سکڑنے کی بیماری ہوتی ہے،جس میں خون کی الٹیاں آتی ہیں پیٹ میں پانی بھر جاتا ہے۔

طبی ماہرین کے مطابق کئی غریب مریض علاج مہنگا ہونے کے باعث ادھورا ہی چھوڑ کر اپنی زندگی دائو پر لگا دیتے ہیں۔

ہیپاٹائٹس سی کے مرض میں مبتلا صوبہ بھر کے مریض حکومت سندھ سے اپیل کر رہے ہیں کہ سنجیدگی کا مظاہرہ کرکے مفت ادویات کی فراہمی کو یقینی بنایا جائے تاکہ وہ بہتر انداز میں اپنا علاج کراسکیں۔

Chatاپنی رائے سے آگاہ کریں