آپ آف لائن ہیں
جنگ ای پیپر
پیر9؍ربیع الثانی 1440ھ 17؍دسمبر2018ء
Namaz Timing
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
پیرس( رضا چوہدری ) فرانس بھر میں 'پیلی جیکٹ ' والوں کی مہن صدر ایمانیول مارکون کے مستعفی کے مطالبہ کےلئے جاری ہے حکومت کی طرف سے پیٹرول کی منصوعات اور بجلی گیس کے بلوں میں اضافہ کافیصلہ مکمل طور واپس لینے کے اعلان کے باوجودتحریک جاری ہے جمعرات کے روز 96 کالجوں کے باہر طلبا اور پولیس کے درمیان آنکھ مچولی اور جھڑپیں جاری رہیں۔ ہفتے کے روز پیرس کی معروف شاہراہ شانزلیز ے پر احتجاجی مظاہرے کی کال بھی دی گئی ہے اتوار کے روز کاشتکار بھی اس تحریک میں شامل ہونے کا اعلان کر چکے ہیں۔ واضح رہے گذشتہ تین ہفتے فرانس کے دارالحکومت پیرس سمیت دیگر شہروں میں ’پیلی جیکٹ‘ والے مظاہرین کی پولیس کے ساتھ شدید جھڑپیں، توڑ پھوڑ جلاو گھیراو کے نتیجہ میں حکومت نے پیٹرول کی منصوعات بجلی اور گیس پر عائد ٹیکس چھ ماہ روک دینے کے اعلان کے بعد یہ اضافہ ہمیشہ کےلئے ختم کرنے کا اعلان بھی کر چکی ہے وزیر اعظم ایڈوا فلیپ نے اعلان کیا کہ حکومت 'پیلی جیکٹ ' کے ساتھ مذاکرات کےلئے تیار ہے مگر تحریک صدر ایمانیوئل مارکون کے مستعفی ہونے تک ختم ہونے کی بجائے تیز ہوتی جارہی ہے سیاسی مبصرین موجودہ صورتحال کو انتہائی گمبیھر قرار دے رہے ہیں ۔ جبکہ شانزلے لیزلے شاہراہ پر سیکورٹی انتہائی سخت کرتے ہوئے تقریباً 8ہزار اہلکار تعینات کردیئے گئے ہیں۔

Chatاپنی رائے سے آگاہ کریں