آپ آف لائن ہیں
جنگ ای پیپر
اتوار 13؍جمادی الاوّل 1440ھ 20؍جنوری2019ء
Namaz Timing
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

کپڑا بنانے والی پاور لوم انڈسٹری ٹیکسٹاٹل صنعت کا اہم ترین جزو ہے، جس سے لاکھوں مزدروں کا روزگار وابستہ ہے۔

فیصل آباد پاورلومز سیکٹر مالکان 2018ء کو اس صنعت کے لیے حکومتی عدم توجہ اور منصوبہ بندی کے فقدان کا سال قرار دیتے ہیں جس سے پاور لوم انڈسٹری مسلسل زوال کا شکار ہے ۔

2018ُُء صنعتوں بالخصوص پاور لوم انڈسٹری کے لیے تباہی کا سال تھا، پاکستان کی ایکسپورٹ کم ہونے سے 50ہزار لومز فیکٹریز بند ہوئیں، 20ہزار لومز آلو، پیاز، ٹماٹر کی طرح سڑکوں پر اسکریپ میں بک گئیں ۔

بند ہو تی ہوئی پاور لومز فیکٹریوں پر لگائے جانے والے تالے اس صنعت کی تباہی کا حال خود بیان کرتے ہیں، انڈسٹری کی بد حالی سے بے روزگار ہونے والے مزدوروں کی امیدِیں حکومتی صنعت بحالی کے وعدوں پر لگی ہیں ۔

فیصل آباد پاور لوم انڈسٹری کی بحالی اور مزدوروں کے معاشی تحفظ کے لیے بحالی صنعت کے وعدوں کو فوری عملی شکل دینے کی ضرورت ہے۔

Chatاپنی رائے سے آگاہ کریں