آپ آف لائن ہیں
جنگ ای پیپر
جمعرات15؍ جمادی الثانی 1440ھ 21؍فروری 2019ء
Namaz Timing
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

دنیا بھر میں لوگ آمر حکمرانوں کے خلاف اکٹھے ہو رہے ہیں، ہیومن رائٹس واچ

واشنگٹن(اے پی پی)انسانی حقوق کے بین الاقوامی ادارے ہیومن رائٹس واچ کا کہنا ہے کہ دنیا بھر کے لوگ آمروں کی زیادتیوں کے خلاف اکٹھے ہو رہے ہیں۔ ادارے کی سالانہ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ 2018ءمیں مغربی جمہوریتوں کے ساتھ ساتھ روایتی انداز میں حکومت چلانے والے ملکوں میں بھی آمرانہ رجحانات کی مخالفت میں اضافہ دیکھا گیا ہے اور کئی ملکوں میں گروپس لوگوں کے حقوق کی حمایت کے لیے منظم ہو رہے ہیں۔ہیومن رائٹس واچ کے کینتھ روتھ کا کہنا ہے کہ اگر آپ ایک آمر ہیں تو آپ کے لیے انسانی حقوق کی خلاف ورزی کرنا بہت آسان ہوتا ہے، یہ وہ طریقہ ہے جس سے آپ اقتدار میں رہتے ہیں، یہ وہ طریقہ ہے جس سے آپ اپنے بینک اکاؤنٹ بھرتے ہیں، یہ وہ طریقہ ہے جس سے آپ اپنے ساتھیوں کو ادائیگی کرتے ہیں اور انہی وجوہات کی بنا پر حکومتیں انسانی حقوق کی خلاف ورزیاں کرنا چاہتی ہیں۔ہیومن رائٹس واچ نے کہا ہے کہ ملائیشیا اور مالدیپ میں ووٹروں نے اپنے بدعنوان وزرائے اعظم کو نکال دیا، آرمینیا کے وزیراعظم بدعنوانی کے خلاف مظاہروں کی وجہ سے اپنے عہدے سے الگ ہو گئے اور ایتھوپیا میں عوامی دباؤ بڑے عرصے سے قائم ایک آمر حکومت کی جگہ ایک ایسے وزیر اعظم کو لے آیا جس نے موثر اصلاحات کا ایک ایجنڈا دیا۔ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ امریکہ میں ووٹروں نے صدر

ڈونلڈ ٹرمپ کی خوف پیدا کرنے والی پالیسیوں کو مسترد کر دیا ہے۔

Chatاپنی رائے سے آگاہ کریں