آپ آف لائن ہیں
جنگ ای پیپر
منگل17؍شعبان المعظم 1440ھ 23؍ اپریل 2019ء
Namaz Timing
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

روس نے جوابی اقدام میں امریکا سے جوہری میزائل معاہدہ معطل کردیا ہے، امریکی صدر ٹرمپ نے ایٹمی ہتھیاروں کے کنٹرول کا معاہدہ گذشتہ روز معطل کردیا تھا۔

روسی صدر ولادیمر پیوٹن کا کہنا ہے کہ روس نئے میزائل کی تیاری شروع کرے گا۔

چین نے امریکی اقدام کی مخالفت کرتے ہوئے دونوں ممالک سے تعمیری مذاکرات کے ذریعے معاملات سلجھانے کا مطالبہ کیا ہے۔

روسی صدرولادیمر پیوٹن نے کہا ہے کہ امریکا کی جانب سے معاہدہ ختم کرنے کے اعلان کے بعد روس بھی معاہدے سے دستبردار ہورہا ہے، جوہری ہتھیاروں کے خاتمے کے لیے روس بات چیت میں پہل نہیں کرے گا، انتظار کریں گے کہ دوسرا فریق سمجھداری کا مظاہرہ کر کے برابری کی سطح پر جامع مذاکرات شروع کرے۔

روسی صدر کا کہنا ہے کہ ’’ہمارے امریکی پارٹنرز نے اعلان کیا ہے کہ وہ معاہدے میں اپنی شراکت کو معطل کررہا ہے لہٰذا ہم بھی اسے معطل کررہے ہیں۔

پیوٹن نے مزید کہا کہ’’ اس حوالے سے ہماری تمام تجاویز میز پر رہیں گی ، مذاکرات کے لئے دروازے کھلے ہیں‘‘

چینی وزارت خارجہ نے ویب سائٹ پر جاری ایک بیان میں کہا ہے کہ امریکا روس کے ساتھ اپنے اختلافات دونوں ملکوں کے درمیان جوہری ہتھیاروں کے اہم معاہدے سے دستبردار ہونے کی دھمکیوں کے بجائے مذاکرات سے حل کرے۔

روس اور امریکا کے درمیان انٹرمیڈیٹ رینج نیوکلیئر فورسز ٹریٹی یعنی آئی این ایف معاہدہ1987ء میں طے پایا تھا، معاہدے کے تحت کم اور درمیانے فاصلے تک مار کرنیوالے ایٹمی میزائلوں کی تنصیب پر پابندی لگائی گئی تھی۔

Chatاپنی رائے سے آگاہ کریں