آپ آف لائن ہیں
جنگ ای پیپر
پیر18؍ ربیع الثانی 1441ھ 16 دسمبر 2019ء
Namaz Timing
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
تازہ ترین
آج کا اخبار
کالمز

بحریہ کی مشقوں کا مقصد امن کو پروان چڑھانا ہے، وزیراعلیٰ سندھ

وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے کہا ہے کہ پاکستان نیوی کی جانب سے امن مشقوں کی میزبانی سے یہ واضح پیغام جاتا ہے کہ پاکستان میں امن و استحکام ہے اور امن کے لیے ہم مشرق اور مغرب کی نیویز کے ساتھ مل کر ایک پلیٹ فارم پر عالمی سطح پر بہتری کے لیے کام کررہے ہیں ۔

انہوں نے یہ بات آج وزیر اعلیٰ ہائوس میں ملٹی نیشنل نیول ایکسرسائز امن کے وفد کے سربراہان سے خطاب کرتے ہوئے کہی۔

وفد کے سربراہان کا تعلق 40 مختلف ممالک سے تھا۔ ملاقات میں چیف سیکریٹری سید ممتاز شاہ، چیئرمین پی اینڈ ڈی محمد وسیم ، وزیراعلیٰ سندھ کے پرنسپل سیکریٹری ساجد جمال ابڑو، ایڈیشنل آئی جی ڈاکٹر امیر شیخ کراچی بھی شریک تھے۔

وفدکی سربراہی پاکستان نیوی کے ہیڈ کموڈور ظفر اقبال نے کی ۔ وزیر اعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے کہا کہ پاکستان نیول 2007 سے ملٹی نیشنل امن ایکسرسائز کی میزبانی کرتا آر ہا ہے، ان ایکسرسائز کا مقصد انڈین اوشن کے ریجن میں امن کو پروان چڑھانا ہے ۔انہوں نے کہا کہ میں کامیاب ایکسرسائز اور بہترین میزبانی پر پاکستان نیوی کو مبارکباد دیتا ہوں۔

وزیراعلیٰ سندھ نے کہا کہ امن ایکسرسائز تربیت کے لحاظ سے بہترین فورم ہے اور کراچی کو امن مشقوں کا اعزاز حاصل ہے، کراچی سمندر کے کنارے آباد ہے جس کی وجہ سے اس کی اہمیت دنیا میں بہت زیادہ ہے۔انہوں نے کہا کہ کراچی امن کا گہوارہ ہے اور دنیا کے چند بہترین شہروں میں اس کا شمار ہوتا ہے ۔ دوران ملاقات وزیراعلیٰ سندھ نے مہمان نیوی کے افسران کے سوالوں کے جوابات بھی دیئے۔

ایک سوال کے جواب میں وزیراعلیٰ سندھ نے کہا کہ کراچی میں کچھ عرصہ پہلے امن و امان کا مسئلہ تھا۔ مگراس وقت کراچی کا امن بہترین ہے، سیاسی ،سماجی، ادبی ، تجارتی سرگرمیاں اب یہاں عروج پر ہیں،سندھ کے عوام بنیادی طور پر پُر امن ہیں۔

انہوں نے کہا کہ مجھے پورا یقین ہے مہمان نیول وفود نے امن ایکسرسائز اور شہر کے وزٹ کو بھرپور طریقے سے انجوائے کیا ہوگا۔

مراد علی شاہ نے امن ایکسر سائز میں تمام ممالک کے نیول وفود کو خوش آمدید کہا۔

قومی خبریں سے مزید
خاص رپورٹ سے مزید