آپ آف لائن ہیں
جنگ ای پیپر
پیر 16؍شعبان المعظم 1440ھ 22؍اپریل 2019ء
Namaz Timing
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
لندن (جنگ نیوز) روزانہ ناشتے میں ایک انڈے کا استعمال امراض قلب اور فالج کو دور رکھنے میں مددگار ثابت ہوتا ہے ۔ اگر آپ زندگی میں امراض قلب کو ہمیشہ خود سے دور رکھنا چاہتے ہیں تو ناشتے میں روزانہ ایک انڈے کا استعمال عادت بنا لیں یہ دعویٰ چین میں ہونے والی طبی تحقیق میں سامنے آیا ۔ طبی جریدے میں شائع ہونے والی ریسرچ میں دریافت کیا گیا کہ روزانہ ایک انڈہ کھانے کی عادت خون کی شریانوں سے جڑے امراض جیسے ہارٹ اٹیک اور فالج وغیرہ سے موت کا خطرہ 18فیصد تک کم کردیتی ہے۔ تحقیق میں انکشاف ہوا کہ یہ خیال غلط ہے کہ زیادہ انڈے کھانےسے جسم میں کولیسٹرول کی مقدار میں اضافہ ہوتا ہے جو خطرناک ثابت ہوسکتا ہے۔ ریسرچرز کا کہنا تھا کہ انڈوں اور امراض قلب کے درمیان تعلق کے بارے میں شواہد مضبوط نہیں ریسرچرز نے انڈے کھانے کی عادت اور خون کی شریانوں سے جڑے امراض کے تعلق کا جائزہ لینے کا فیصلہ کیا اور 30سے 79سال کے افراد کے13 فیصد افراد نے بتایا کہ وہ ایک انڈہ روزانہ کھاتے ہیں جبکہ 9 فیصد اس غذا سے ہمیشہ دور رہے یا بہت کم کھانے کا اعتراف کیا ان کا کہنا تھا کہ فالج اور برین ہیمرج قبل از وقت موت کی بڑی وجوہات میں شامل ہیں جن کے بعد امراض قلب کا نمبر آتا ہے ایک مخصوص گروپ کا 9سال تک جائزہ لینے کے بعد ریسرچرز نے دریافت کیا ایک انڈہ

روزانہ کھانے سے امراض قلب کے خطرات کم ہو جاتے ہیں انہوں نے پتہ لگایا کہ ایک انڈہ روزانہ کھانے سے برین ہیمرج (دماغی شریان پھٹنے)کا خطرہ 26 فیصد تک کم ہو جاتا ہے جبکہ اس عادت کے نتیجے میں کسی بھی قسم کے فالج سے موت کا خطرہ 28فیصد تک کم ہو جاتا ہے۔ تحقیق کے مطابق یہ عادت امراض قلب کا خطرہ بھی 12 فیصد تک کم کر دیتی ہے ماہرین کا کہنا ہے کہ اعتدال میں رہ کر انڈے کھانا یعنی روزانہ ایک انڈہ کھانا جان لیوا امراض سے بچا سکتا ہے۔
ٔ

Chatاپنی رائے سے آگاہ کریں