آپ آف لائن ہیں
جنگ ای پیپر
جمعہ14؍رجب المرجب 1440 ھ22؍ مارچ 2019ء
Namaz Timing
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان کے دورہ پاکستان میں دونوں ممالک کے درمیان سرمایہ کے معاہدے ہوئے،اس حوالے سے چیئرمین سرمایہ کاری بورڈ ہارون شریف نے تفصیلات بتادیں۔

چیئرمین سرمایہ کاری بورڈنے ایک بیان میں کہا کہ گوادر میں 5 سال کی مدت میں 10ارب ڈالر مالیت کی آئل ریفائنری قائم کی جائے گی۔

ہارون شریف نے کہا کہ سعودی عرب پاکستان کو 7 ارب ڈالر مالی امداد دے گا، پاکستان کو ماہانہ 25کروڑ ڈالرز مالیت کا تیل موخر ادائیگی پر فراہم کیا جائے گا۔

انہوں نے کہا کہ 2 ارب ڈالر کے2بجلی گھر بھی سعودی عرب کو فروخت کیے جا سکتے ہیں،سعودی عرب پاکستان سے سرجیکل آلات خریدے گا۔

چیئرمین سرمایہ کاری بورڈ نے مزید کہا کہ پاکستان اورسعودی عرب کے درمیان باہمی مفاہمت کی7یادداشتوں پردستخط ہوئے ہیں، سعودی عرب پاکستان میں 10 ارب ڈالر کی طویل المدتی سرمایہ کاری کرے گا۔

ان کا کہناتھا کہ سعودی عرب گوادر میں 5 سال میں آئل ریفائنری لگائے گا،پاکستان کو 3 ارب ڈالر مارلیت کا ادھار تیل فراہم کرے گا۔

ہارون شریف نے یہ بھی کہا کہ سعودی عرب بجلی بنانے کے کارخانوں کے نجکاری پروگرام میں حصہ لے گا،اگر سعودی بولی کامیاب رہی تو 2 ارب ڈالر کے کارخانے خرید سکے گا۔

انہوں نے مزید کہا کہ نجی شعبے میں پاکستان اور سعودی کے درمیان 2 معاہدے ہوئے ہیں،سعودی عرب پاکستان سے سرجیکل ساز و سامان خریدے گا اور آر ایل این جی پلانٹس میں 4 ارب ڈالر کی سرمایہ کاری کرے گا۔

چیئرمین سرمایہ کاری بورڈ کا کہنا تھا کہ آر ایل این جی پلانٹس میں سرمایہ کاری ایک سے دوسال میں ہوگی، ایکوا پاورقابل تجدید توانائی شعبے میں 2ارب ڈالر کی سرمایہ کاری کرے گا۔

ہارون شریف کے مطابق سعودی فنڈ برائے پاکستان 1ارب ڈالر کی سرمایہ کاری کرےگا جبکہ پیٹرو کیمیکل منصوبوں میں سرمایہ کاری 1 ارب ڈالر تک بڑھائی جائے گی جو 2 سے 3 سال کے اندر بڑھائی جائے گی۔

انہوں نےکہاکہ خوراک و زراعت کے پراجیکٹس میں 1 ارب ڈالر اور طویل مدتی سرمایہ کاری 3 سے 5 سال تک محیط ہوگی۔

Chatاپنی رائے سے آگاہ کریں