آپ آف لائن ہیں
جنگ ای پیپر
اتوار16؍رجب المرجب 1440ھ 24؍مارچ 2019ء
Namaz Timing
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

لاہور شہر کو بیمار جانوروں کا ناقص اور مضر صحت گوشت کھلانے کی بڑی کوشش ناکام بنا دی گئی۔

پنجاب فوڈ اتھارٹی نے لاہور کے سلاٹر ہاؤس میں کارروائیاں کرتے ہوئے بیمار جانوروں کا 4 ہزار 3 سو کلوگوشت برآمد کر لیا جبکہ 8 ہزار کلو باقیات تلف کر دی گئیں۔

اولڈ سلاٹر ہاؤس ایریا میں غیر قانونی تین مذبحہ سیل کردیے گئے، مضر صحت گوشت فروخت کرنے کے مرتکب ملزمان فرار ہو گئے۔

یہ کارروائیاں ڈی جی پنجاب فوڈ اتھارٹی کی سربراہی میں کی گئیں جبکہ بیمار جانوروں کی باقیات پیمکو سینٹر میں تلف کی گئیں۔

پنجاب فوڈ اتھارٹی کی جانب سے اولڈ سلاٹر ہاؤس ایریا میں 3 غیر قانونی مذبحہ، میٹ چلر اور فیٹ رینڈرنگ یونٹ سیل کیے گئے۔

ڈی جی پنجاب فوڈ اتھارٹیکیپٹن (ر) محمد عثمان کے مطابق سیل کیے گئے سلاٹر ہاؤس پہلے بھی سیل کیے جا چکے ہیں، جنہیں غیر قانونی طور پر دوبارہ کھول کر کام کیا جا رہا تھا۔

انہوں نے بتایا کہ غیر قانونی مذبحہ میں بیمار جانوروں کا گوشت تیار کر کے اس پر جعلی مہریں لگائی جاتی تھیں،غیر قانونی مذبحہ سے جعلی مہریں بھی برآمد کی گئی ہیں، جبکہ ملزمان موقع سے فرار ہو گئے۔

کیپٹن (ر) محمد عثمان کا کہنا ہے کہ شہریوں تک صحت بخش گوشت کی فراہمی پنجاب فوڈ اتھارٹی کی اولین ترجیح ہے، بیمار جانوروں کے ناقص گوشت سے متعدد موذی بیماریاں پھیلتی ہیں، ویجیلنس ٹیمیں گلی محلوں میں چھپے ذبح خانوں کا سراغ بھی لگا رہی ہیں۔

ڈی جی فوڈ اتھارٹی نے شہریوں سے اپیل کی کہ کہیں بھی مضر صحت گوشت دیکھیں تو بذریعہ ٹیلی فون ہیلپ لائن پر، موبائل اپلیکیشن کے ذریعے یا ویب سائٹ پر اطلاع دیں۔

Chatاپنی رائے سے آگاہ کریں