آپ آف لائن ہیں
جنگ ای پیپر
جمعرات13؍رجب المرجب 1440ھ 21؍مارچ 2019ء
Namaz Timing
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

نیوزی لینڈ میں مسلم امیگریشن49نمازیوں کی موت کی ذمہ دار ہے، آسٹریلوی سینیٹر

لندن ( نیوزڈیسک ) ایک آسٹریلین سینیٹر کے اس دعویٰ سے غم و غصہ کی لہر دوڑ گئی ہے کہ دو مساجد میں 49 نمازیوں کی اموات کی ذمہ داری نیوزی لینڈ میں مسلمانوں کی امیگریشن پر عائد ہوتی ہے۔سن نے اے بی سی نیوز کے حوالے سے بتایا کہ 69 سالہ فرازر ایننگ جس وقت ملبورن میں میڈیا سے گفتگو کر رہے تھے اس وقت ایک نوجوان کو دیکھا گیا جوایک جانب کھڑا انتظار کر رہا تھا پھر اس نے اپنے غصہ کا اظہار کرتے ہوئے انڈا آسٹریلوی سیاست دان کے سر کی پچھلی جانب دے مارا۔ سنیٹر ایننگ نے اس کے ردعمل میں نوجوان کی جانب دیکھ کر مکہ لہرایا۔ حاضرین نے 49 افراد کی ہلاکت اور درجنوں کے شدید زخمی ہونے کے تناظر میں ان کے ریمارکس کی مذمت کی۔ سب سے پہلے مذمت آسٹریلوی وزیراعظم سکاٹ موریسن نے کی جنہوں نے حملہ آور کو پرتشدد دائیں بازو کا انتہاپسند دہشتگرد قرار دیا تھا۔ انہوں نے اپنی تقریر میں کہا کہ آسٹریلوی پارلیمنٹ میں ہی نہیں بلکہ آسٹریلیا میں بھی ایسے نظریات کی کوئی جگہ نہیں ہے۔ برطانوی وزیر داخلہ ساجد جاوید نے بھی سنیٹر

ایننگ کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ سوگ اور افسوس کے وقت آسٹریلوی سنیٹر تشدد اور انتہاپسندی کے شعلوں کو ہوا دے رہے ہیں۔ آسٹریلویوں کو بھی اس نسل پرست شخص کے ریمارکس پر شرمندگی کا احساس ہو گا۔ انہوں نے مزید کہا کہ یہ شخص کسی بھی طرح ہمارے آسٹریلوی دوستوں کی نمائندگی نہیں کر سکتا۔

Chatاپنی رائے سے آگاہ کریں