آپ آف لائن ہیں
جنگ ای پیپر
بدھ20؍ذیقعد 1440ھ 24؍جولائی 2019ء
Namaz Timing
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

نیوزی لینڈ کے ماہرین قانون کی رائے ہے کہ سانحہ کرائسٹ چرچ میں ملوث دہشت گرد پر دہشت گردی کی جگہ قتل کی دفعہ لگائی تو سزا کے امکانات بڑھ جائیں گے، اگر دہشت گردی کی دفعہ لگائی تو مقدمہ طوالت اختیار کرلے گا۔

استغاثہ کے وکلا کی رائے ہے کہ قتل کی دفعہ لگائی گئی تو سزا دلوانا آسان ہوگا۔

نیوزی لینڈ کی وزیراعظم جیسنڈا آرڈن کرائسٹ چرچ حملے کو دہشت گردی قرار دے چکی ہیں۔

نیوزی لینڈ پولیس کا کہنا ہے کہ دہشت گرد برینٹن ٹیرنٹ پر دہشت گردی کی دفعہ لگانے پر سنجیدہ ہیں۔

کرائسٹ چرچ سانحہ کیس کی کارروائی پر خدشات سے متعلق برطانوی اخبار کی خصوصی رپورٹ کے مطابق عدالت میں دہشت گردی کی بات کرنے پر حملہ آور کو نفرت انگیز نظریات کے پرچار کا پلیٹ فارم مل جائے گا۔

رپورٹ کے مطابق برینٹن ٹیرنٹ پر قتل کا مقدمہ چلا تو سزا دس سال قید ہوگی،1961 سے نیوزی لینڈ میں سزائے موت دینے کا قانون ختم کیا جاچکا ہے،نیوزی لینڈ میں سخت ترین سزا 2001 ءمیں تہرے قتل کے مجرم کو 30 سال قید ہوئی تھی۔

نیوزی لینڈ میں دہشت گردی کے قوانین 2002 ءمیں نائن الیون کے بعد متعارف کروائے گئے تھے، جنہیں عدالتوں میں ابھی آزمایا نہیں گیا اور یہ دہشت گرد گروہوں پر لاگو ہوتے ہیں۔

Chatاپنی رائے سے آگاہ کریں