آپ آف لائن ہیں
جنگ ای پیپر
جمعرات23؍ ربیع الاوّل 1441ھ 21؍نومبر 2019ء
Namaz Timing
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
تازہ ترین
آج کا اخبار
کالمز

اپنی زبان اور ادب سے ناآشنا قومیں صفحہ ہستی سے مٹ جاتی ہیں،پشتون ادباء وشعراء

کوئٹہ(اسٹاف رپورٹر )پشتون ادیبوں اور شاعروں نے زبان وادب اور ثقافت کو قوموں کو قریب لانے کا ذریعہ قرار دیتے ہوئے کہاہے کہ اپنی زبان اور ادب سے ناآشنا قومیں صفحہ ہستی سے مٹ جاتی ہیں ہمیں زبان وادب کی خدمت کیلئے ہر سطح پر اپنا کرداراداکرناچاہیے ،پشتون ثقافت میں بہار کی آمد پر خصوصی تقاریب کا اہتمام کیاجاتاہے ،خاٹول گل مشاعرہ گزشتہ کئی سال سے کامیابی کے ساتھ منعقد ہوتاآیاہے جس کا سہرا پشتو ادبی غورزنگ کے سرجاتاہے جو انتہائی مشکل اور کٹھن حالات میں بھی ادیبوں اور دانشوروں کو قریب لانے کا فریضہ سرانجام دے رہی ہے ۔ان خیالات کااظہار بزرگ شاعر اور ادیب شفیق العالم معذور یار ،ڈاکٹر محمد صادق ژڑک ،عمر گل عسکر ،حضرت علی بابئی ،نعمت اللہ دلشاد ،یوسف ساحل اور دیگر نے جمعرات کوکوئٹہ پریس کلب میں خاٹول گل بہاریہ مشاعرے کے موقع پر خطاب کرتے ہوئے کیا۔ مشاعرے میں کوئٹہ سمیت پشین،زیارت ،ہرنائی ،قلعہ سیف اللہ اور دیگر علاقوں سے آئے ہوئے سینکڑوں افراد نے شرکت کی ۔اس موقع پر درجنوں شعراء نے بہار کی مناسبت سے اپنے اشعار ،نظمیں اور غزلیں پیش کیں جنہیں حاضرین نے خوب سراہا ۔اس موقع پر مختلف مکاتب فکر سے تعلق رکھنے والی اہم شخصیات بھی موجود تھیں ۔مقررین نے کہاکہ کسی بھی قوم کی ترقی میں شاعر اور ادیب فعال

کرداراداکرتے ہیں پشتو اس بنا ء پر خوش قسمت زبان ہے کہ اس کے چاہنے والے گمنام ہیروز اس کی ترقی کیلئے دن رات اپنی مدد آپ کے تحت کوشاں ہیں ۔انہوں نے کہاکہ پشتوادبی غورزنگ نے گزشتہ 15سال کے دوران ہر سطح پر اپنی فعالیت کا بھرپور ثبوت دیاہے نہ صرف بین الاقوامی سیمینارز منعقد کئے گئے بلکہ درجنوں کتابیں چھاپ کر زبان وادب کی عملی خدمت کی گئی ،انہوں نے اس بات پر زوردیاکہ زبان وادب کی ترقی اورمعاشرے کو امن ،محبت اور خوشحالی کا گہوارہ بنانے کیلئے شاعروں اور ادیبوں کی طرح دیگر مکاتب فکر کے افراد بھی اپنا کردار ادا کریں ۔  

کوئٹہ سے مزید