آپ آف لائن ہیں
جنگ ای پیپر
منگل12؍ذیقعد 1440ھ 16؍جولائی 2019ء
Namaz Timing
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

پاکستان کرکٹ ٹیم کے کپتان سرفراز احمد نے تقریر کرنے کو کرکٹ کھیلنے سے بھی زیادہ مشکل قرار دے دیا۔

جامعہ کراچی میں’صحت مند نوجوان، مضبوط قوم ‘ کے عنوان سے منعقدہ سیمینار سے خطاب میں سرفراز احمد نے کہا کہ 2 سال قبل ٹیم میں اُن کی جگہ نہیں بنتی تھی لیکن آج وہ کپتان ہیں۔

تقریب سے وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر محمد اجمل خان،گلوکار شہزاد رائے، پروفیسر ڈاکٹر نسرین اسلم شاہ، ماہرنفسیات ڈاکٹر عنیزہ نیاز و دیگر نے خطاب کیا۔

سرفراز احمد نے شرکاء سے گفتگو میں کہا کہ کھیل سے زیادہ مشکل کام تقریر کرنا ہے،آج کے نوجوان اپنے موبائل پر اچھی ڈسپلے پک (ڈی پی) لگاکر خوش ہوجاتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ میری طلبہ و طالبات کو نصیحت ہے کہ اللہ کی ذات پر یقین اور بھروسہ رکھیں،دعا مانگیں،وہ محنت کا صلہ ضرور دیتا ہے، آپ ساری زندگی اساتذہ کی عزت کریں اور انہیں یاد رکھیں۔

قومی کپتان نے اس موقع پر اپنی مثال پیش کی اور کہا کہ دو ڈھائی برس قبل تک پاکستانی ٹیم میں میری جگہ نہیں تھی آج میں ٹیم کا کپتان ہوں۔

دوران تقریر قومی کپتان ٹیم کی حالیہ پرفارمنس پر گفتگو سے گریز کیا ساتھ ہی کوئٹہ میں پی ایس ایل 4 کی فاتح کے استقبال سے متعلق بات کی۔

سرفراز احمد نے یہ بھی کہا کہ نوجوانوں کی مضبوطی سے ہی پاکستان مضبوط ہوگا، اگر ہمیں بحیثیت قوم آگے بڑھنا ہے تو ضروری ہے کہ نوجوان مضبوط اور پڑھے لکھے ہوں،یہی آگے جاکر ملک کا نام روشن کریں گے۔

ڈاکٹر محمد اجمل خان نے کہا کہ فکری انقلاب کے بغیر معاشرہ کسی بھی طرح فلاح وبہتری کا اعلیٰ نمونہ نہیں بن سکتا،ہماری نوجوان نسل میں صلاحیتوں کی کمی نہیں ہے،ضرورت عدم برداشت ، تشدداور منفی رویوں کی بیخ کنی کرنے کی ہے۔

انہوں نے کہاکہ سرفراز احمد کی جیت قسمت کا نتیجہ نہیں بلکہ ان کی محنت کی گواہی چاروں پی ایس ایل میں ٹیم کی عمدہ کارکردگی ہے،یہ آج کے نوجوان کے رول ماڈل ہیں، مجھے خوشی ہے جامعہ کراچی کا طالب علم قومی ٹیم کی قیادت کررہا ہے۔

گلوکار شہزاد رائے نے کہا کہ مجھے خوشی ہے کہ جامعہ کراچی میں اب ایک ایسا ماحول دیکھ رہے ہیں کہ جس میں اظہاررائے کی آزادی ہے،اس طرح کے مثبت رویے ہی معاشروں کے استحکام کا باعث بانتے ہیں۔

ڈاکٹر نسرین اسلم شاہ نے کہا کہ مذکورہ سیمینار کا مقصد نوجوان طلبا و طالبات کو ملک وقوم کی ترقی کے لئے اپنا کرداراداکرنے کے لئے راغب کرنا ہے۔

ماہر نفسیات ڈاکٹر عنیزہ نیاز نے کہا کہ اسلام کی جو قدریں ہیں جس کو غیر مسلم اپنا رہے ہیں،بدقسمتی سے وہ ہم بھول گئے،ہم سب کو اپنے معاشرے کا خیال رکھنا چاہیے۔

ماہر غذا ڈاکٹر عائشہ عباس نے کہا کہ خواب ضروردیکھیں خواب دیکھنا زندگی میں بہت ضروری ہے اور پھر ان خوابوں کی تعبیر کے لئے محنت کریں۔

Chatاپنی رائے سے آگاہ کریں