آپ آف لائن ہیں
جنگ ای پیپر
جمعہ13؍ شعبان المعظم 1440 ھ19؍اپریل 2019ء
Namaz Timing
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
کراچی(اسٹاف رپورٹر) سندھ ہائیکورٹ نے 2؍ ماہ کی فیس اکٹھے لینے سے روکدیا اور ایک ساتھ 2 ماہ کی فیس وصول کرنے والے اسکولوں کو ایک ماہ کی فیس واپس کرنے کا حکم دیدیا ہے اور بنچ کے سربراہ جسٹس عقیل احمد عباسی نے قرار دیا کہ اگر کسی اسکول نے 2 ماہ کی فیس ایک ساتھ مانگی تو توہین عدالت کی کارروائی کرینگے۔ عدالت نے پرائیویٹ اسکولوں کو طلبا کیخلاف کسی قسم کی کارروائی سے روک دیا۔ پیر کو جسٹس عقیل عباسی، جسٹس محمد علی مظہر اور جسٹس محمد فیصل کمال عالم پر مشتمل تین رکنی بنچ کے روبرو اسکول فیسوں میں غیرقانونی اضافے سے متعلق زائد فیس وصول کرنیوالے نجی اسکولوں کیخلاف توہین عدالت کی درخواستوں کی سماعت ہوئی۔ فاؤنڈیشن پبلک اسکول کے وکیل نے موقف اپنایا کہ والدین نے اگست 2018 کے بعد فیس ادا نہیں کی۔ ستمبر 2018 کے فل بنچ کے فیصلے کے بعد نیا چالان جاری کیا۔ دسمبر میں سپریم کورٹ کے حکم پر کرنٹ فیس میں 20 فیصدکٹوتی کی گئی۔ اسکول انتظامیہ نے مختلف کیمپس کے جاری کردہ چالان کی کاپی پیش کردی۔

Chatاپنی رائے سے آگاہ کریں