آپ آف لائن ہیں
جنگ ای پیپر
ہفتہ16؍ربیع الثانی1441ھ 14؍دسمبر 2019ء
Namaz Timing
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
تازہ ترین
آج کا اخبار
کالمز

مشیر خزانہ کا معاشی ترقی کا ہدف پورا نہ ہونے کا اعتراف

وزیراعظم عمران خان کے مشیر خزانہ عبدالحفیظ شیخ نے اقتصادی سروے میں معاشی ترقی کے اہداف پورے نہ ہونے کا اعتراف کرلیا۔

اسلام آباد میں پریس کانفرنس میں مشیر خزانہ کے ہمراہ وزیر مملکت برائے ریونیو حماد اظہر بھی موجود تھے،اس دوران حفیظ شیخ نے اقتصادری سروے رپورٹ برائے مالی سال 2018-19 پیش کی۔

انہوں نے کہا کہ جب حکومت سنبھالی تو ملکی معیشت مشکلات کا شکار تھی ملک کو انہی مشکلات سے نکالنے کے لیے اقدامات کر رہے ہیں۔


حفیظ شیخ نے مزید کہا کہ رواں مالی سال شرح نمو 3اعشاریہ 3 فیصد رہی جبکہ ہدف 6اعشاریہ 2فیصد تھا، زرعی شعبے کی شرح نمو بھی 3اعشاریہ 8فیصد کے ہدف کے برعکس 0اعشاریہ 85فیصد رہی۔

ان کا کہنا تھا کہ طویل عرصے سے ملکی وسائل پر توجہ نہیں دی گئی، مشکل صورت حال سے نکلنے کے لیے اقدامات کررہے ہیں۔

مشیر خزانہ نے یہ بھی کہا کہ ماضی کی حکومتوں نے ملک کو قرضوں کے دلدل میں پھنسایا اور موجودہ حکومت نے اقتدار سنبھالا تو معیشت زبوں حالی کا شکار تھی لیکن معاشی استحکام کے لیے مثبت اقدامات کیے جارہے ہیں۔

اقتصادی سروے پیش کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ رواں مالی سال معاشی ترقی کا ہدف 6.2فیصد تھا لیکن معاشی ترقی کی شرح 3.3 فیصد رہی،رواں مالی سال زرعی شعبے کی شرح نمو 0.85فیصد رہی جبکہ زرعی شعبے کی شرح نمو کا ہدف 3.8فیصد تھا۔

انہوں نے کہا کہ بڑی فصلوں کی گروتھ 3 فیصد ہدف کے مقابلے میں منفی 6.55 فیصد رہی جبکہ دیگر فصلوں کی ترقی کی شرح 3.5 فیصد ہدف کے مقابلے میں 1.95 فیصد رہی۔

اقتصادی رپورٹ کے مطابق کاٹن جننگ کے شعبے کی گروتھ 8.9 فیصد ہدف کے مقابلے میں منفی 12.74فیصد رہی، لائیو اسٹاک کے شعبے نے 4فیصد کی شرح سے ترقی کی، اس شعبے کی گروتھ کا ہدف 3.8فیصد تھا۔

ان کا کہنا تھا کہ ماہی گیری کے شعبے کی ترقی کی شرح 0.79 فیصد رہی جب کہ ماہی گیری کے شعبے کی ترقی کا ہدف 1.8 فیصد تھا، صنعتی شعبے کی ترقی 7.6فیصد ہدف کے مقابلے میں 1.40 فیصد رہی۔

رپورٹ کے مطابق کان کنی کے شعبے کی گروتھ منفی 1.96 فیصد رہی، اس شعبے کی گروتھ کا ہدف 3.6 فیصد تھا، چھوٹی صنعتوں کی گروتھ ہدف کے مطابق 8.2 فیصد ریکارڈ کی گئی جبکہ تعمیراتی شعبے کی ترقی کی شرح 10فیصد ہدف کےمقابلے میں 7.57 فیصد رہی۔

خدمات کے شعبے کی ترقی کی شرح 4.71فیصد رہی تاہم خدمات کے شعبے کی ترقی کا ہدف 6.5فیصد تھا، تھوک اور پرچون کے کاروبار کی ترقی کی شرح 3.11فیصد ریکارڈ ہوئی، ان شعبوں کی ترقی کا ہدف 7.8فیصد تھا۔

ٹرانسپورٹ اسٹوریج اور کمیونیکیشن کے شعبوں میں 3.34فیصد کی شرح سے گروتھ ہوئی، ان شعبوں کی ترقی کا ہدف 4.9فیصد مقرر تھا، فنانس اینڈ انشورنس کےشعبوں میں ترقی کی شرح کا ہدف 7.5فیصد مقرر تھا لیکن ان شعبوں میں ترقی کی شرح 5.14فیصد رہی۔

ہاؤسنگ سروسز کے شعبے میں ہدف کے مطابق 4فیصد کی شرح سے ترقی ہوئی، عمومی سرکاری خدمات کے شعبوں میں ترقی کی شرح 7.99فیصد رہی، ان شعبوں میں ترقی کی شرح کا ہدف 7.2 فیصد مقرر تھا۔

تجارتی خبریں سے مزید