آپ آف لائن ہیں
جنگ ای پیپر
بدھ13؍ذیقعد 1440ھ 17؍جولائی 2019ء
Namaz Timing
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
کراچی(اسٹاف رپورٹر)اسٹریٹ کرائمز کی بڑھتی وارداتوں کے پیش نظر کراچی پولیس نے 2 نئے سیلزقائم کئے گئے ہیں جو شہر بھر میں اسٹریٹ کرائمز اور موٹر سائیکل چوری اور چھیننے کی وارداتوں پر ہنگامی بنیادوں پر کام کریں گے، اینٹی وائلینٹ کرائم سیل کا نام تبدیل کر کے اینٹی اسٹریٹ کرائم یونٹ رکھنے کا فیصلہ کرلیا گیاہے، یونٹ جدید طرز پر موبائل چھیننے اور دیگر اسٹریٹ کرائم کی وارداتوں پر کام کرے گا، موبائل اور دیگر سامان فروخت کرنے والی مارکیٹس کا ڈیٹا بھی مرتب کرنا شروع کر دیا گیا ہے، اینٹی کار لفٹنگ سیل کا نام بھی تبدیل کر کے اینٹی وہیکل اینڈکرائم یونٹ رکھ دیا گیا جبکہ موٹرسائیکل چوری اور چھیننے کی وارداتوں پر قابو پانے کے لیے اینٹی ٹو ویلر تھیفٹ کے نام سے یونٹ قائم کر دیا گیا، ڈی آئی جی سی آئی اے کے مطابق شہر قائد سے موٹر سائیکل چوری ہو کر اندرون سندھ، بلوچستان اور پنجاب میں فروخت کی جاتی ہیں، نئے یونٹس ضلعی پولیس کے ساتھ مل کر کارروائیاں کریں گے،شہریوں کو بہتری کی امید تو ہے لیکن پولیس کے رویے سے بھی نالاں ہیں، پولیس حکام کے مطابق موٹر سائیکل بنانے والی کمپنیز کے ساتھ مل کر نئی موٹر سائیکلوں میں ٹریکر لگانے کا فیصلہ کیا گیا ہے جس کو سندھ حکومت جلد قانون کا حصہ بنا لے گی۔

Chatاپنی رائے سے آگاہ کریں