آپ آف لائن ہیں
جنگ ای پیپر
منگل19؍ذیقعد 1440ھ 23؍جولائی 2019ء
Namaz Timing
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

پاکستان کرکٹ ٹیم کے ورلڈ کپ2019 میں سفر کو دیکھ کر ہر کوئی اس کو 1992 ورلڈ کپ کی کارکردگی سے ملا رہا ہے ، تاہم پاکستان کرکٹ ٹیم کے نوجوان فاسٹ بولر شاہین شاہ آفریدی کو ان باتوں سے فرق نہیں پڑتا ۔

بدھ کو ایجبسٹن میں نیوزی لینڈ کیخلاف تباہ کن بولنگ کرنے والے فاسٹ بولر کا کہنا تھا کہ وہ تو 1992 میں پیدا بھی نہیں ہوئے تھے تو انہیں اندازہ ہی نہیں کہ ستائیس سال پہلے کیسا ماحول تھا ۔

تاہم انہوں نے خواہش ظاہر کی کہ وہ اس سال یہ ضرور محسوس کرنا چاہیں گے کہ ورلڈ کپ جیت کر کیسا لگتا ہے ۔ شاہین آفریدی نے کہا کہ وہ وسیم اکرم کو فالو کرتے ہیں اور ان جیسا بولر ہی بننا چاہتے ہیں۔

نوجوان بولر نے بتایا کہ میچ سے قبل وسیم اکرم کے مشورے نے ان کو کافی مدد دی ، وسیم اکرم کے علاوہ وہ اپنے بھائی، ٹیسٹ کرکٹر ریاض آفریدی سے بھی بہت کچھ سیکھتے ہیں۔

انھوں نے کہا کہ میچ سے قبل بھائی نے لائن اور لینتھ بہتر کرنے کا مشورہ دیا تھا ۔ انیس سالہ فاسٹ بولر کا کہنا تھا کہ انہیں امید ہے کہ پاکستان کرکٹ ٹیم ورلڈ کپ میں اپنے باقی دونوں میچز جیت کر سیمی فائنل تک جگہ ضرور بنائے گی ۔

Chatاپنی رائے سے آگاہ کریں