آپ آف لائن ہیں
جنگ ای پیپر
جمعرات14؍ ذیقعد1440ھ18؍جولائی 2019ء
Namaz Timing
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

ورلڈ کپ کرکٹ 2019ء کے سیمی فائنل میں کوالیفائی نہ کرنے کے باوجود پاکستان کرکٹ بورڈ نے سرفراز احمد کو کپتانی سے ہٹانے کے امکانات کو رد کردیا ہے۔

اس وقت پی سی بی انتظامیہ سرفراز احمد کے مستقبل کے بارے میں نہیں سوچ رہی۔ پاکستان کرکٹ بورڈ کپتان سرفراز احمد کی کارکردگی کا جائزہ لے رہا ہے لیکن ٹیسٹ اور ون ڈے فارمیٹ سے انہیں ہٹانے کی فوری طور پر کوئی تجویز زیر غور نہیں ہے۔

پی سی بی کے ایم ڈی وسیم خان نے ہفتے کو ’جنگ‘ سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ کپتان کی تقرری چیئرمین پی سی بی احسان مانی کا استحقاق ہے لیکن ابھی سرفراز احمد کو تبدیل کرنے کا کوئی فیصلہ نہیں ہوا ہے۔ آئی سی سی میٹنگ کے بعد لاہور جاکر اس بارے میں بات چیت ہوگی۔ اس حوالے سے میڈیا کی قیاس آرائیوں میں اس وقت کوئی صداقت نہیں ہے۔

واضح رہے کہ ڈیڑ ھ سال پہلے مصباح الحق کی ریٹائرمنٹ کے بعد شہریار خان نے سرفراز احمد کو تینوں فارمیٹ کا کپتان مقرر کیا تھا۔

اس وقت پاکستان کی ٹی ٹوئنٹی ٹیم عالمی نمبر ایک ہے جبکہ ون ڈے اور ٹیسٹ میں پاکستان ٹیم کی کارکردگی ملی جلی ہے۔

برمنگھم سے فون پر بات کرتے ہوئے وسیم خان نے کہا کہ ستمبر کے آخر میں سری لنکا کے ساتھ دو ٹیسٹ کی سیریز ہے۔ ون ڈے میچ دسمبر میں ہوں گے۔

انہوں نے کہا کہ کرکٹ کمیٹی کی 29 جولائی کی میٹنگ میں کپتان کی کارکردگی پر بھی بات ہوگی لیکن کرکٹ کمیٹی مکی آرتھر اور دیگر کوچز اورسلیکشن کمیٹی کی تین سالہ کارکردگی کا جائزہ لے گی۔

انہوں نے واضح کیا کہ ورلڈ کپ میں 9 میں سے 5 میچ جیتنے کے بعد سرفراز احمد کو تبدیل کرنے کی کوئی تجویز زیر غور نہیں ہے۔ نہ ہی ہم کوئی جلد بازی میں فیصلہ کرنا چاہتے ہیں۔ پاکستان ٹیم کے تمام کوچنگ اسٹاف کا معاہدہ ورلڈکپ تک کا تھا، اب نئے سرے سے تقرریاں ہوں گی جس کے لیے ہیڈ کوچ، بولنگ کوچ، بیٹنگ کوچ اور دوسرے عہدوں کے لیے اگلے چند روز میں اشتہار جاری کردیا جائے گا۔

ذرائع کے مطابق ٹیم کے ساتھ مزید کام کرنے کی خواہش کا اظہار کرنے والے مکی آرتھر کو بھی ازسرنو اپلائی کرنا ہوگا۔

پی سی بی رولز کے مطابق ایک لاکھ روپےسے زیادہ تنخواہ پانے والوں کے تقرر سے پہلے اشتہار دینا لازمی ہے، جس کے بعد انٹرویوز کے ذریعے تقرر کیا جاتا ہے۔

وسیم خان نے کہا کہ چار سال کی پلاننگ کریں گے اور اسی مناسبت سے فیصلے کریں گے لیکن اس پر مکمل غور و خوض کیا جائےگا۔ پی سی بی کرکٹ کمیٹی کا پہلا اجلاس 29 جولائی کو طلب کیا گیا ہے، ایم ڈی وسیم خان اور مصباح الحق لاہور میں ہوں گے جبکہ کمیٹی کے سب سے ہیوی ویٹ رکن وسیم اکرم کینیڈا سے اسکائپ کے ذریعے میٹنگ میں شرکت کریں گے۔

اجلاس میں ڈائریکٹر گیم ڈیولپمنٹ مدثر نذر اور ڈائریکٹر انٹرنیشنل ذاکر خان بھی شریک ہوں گے۔

محسن خان کے استعفے اور وسیم خان کی کرکٹ کمیٹی کے سربراہ کی حیثیت سے تقرری کے بعد یہ کرکٹ کمیٹی کا پہلا لیکن انتہائی حساس نوعیت کا اجلاس ہے، جس میں ورلڈ کپ کی کارکردگی کا جائزہ لیا جائے گا۔

Chatاپنی رائے سے آگاہ کریں