آپ آف لائن ہیں
جنگ ای پیپر
بدھ19؍ ذوالحجہ 1440ھ 21؍اگست 2019ء
Namaz Timing
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

بھارت میں پولیس نے ایک لڑکی کو پہلے اغواکاروں سے بازیاب کرایا اور پھر انہیں ہی واپس کر دی۔

بھارتی میڈیا رپورٹس کے مطابق بھارتی ریاست اُتر پردیش کے رہائشی لڑکا لڑکی نے رواں ماہ کی 11 تاریخ کو گھر سے فرار ہو کر شادی کر لی تھی، شادی کے بعد نوبیاہتہ جوڑا الہٰ آباد کی عدالت میں قانونی پناہ کی غرض سے آیا اور عدالت کے باہر ہی سے اغوا ہوگیا۔

لا پتہ ہونے پر لڑکی کی ماں نے 14 تاریخ کو پولیس اسٹیشن میں گمشدگی کی ایف آئی آر درج کراتے ہوئے اپنی بیٹی کے دوست 24 سالہ لڑکے پر شک ظاہر کیا تھا۔

پولیس کے مطابق کئی دنوں کی تلاش کے بعد لڑکا لڑکی کو اُن کی گاڑی کی لوکیشن کی مدد سے بازیاب کروالیا گیا، جوڑے کو اغوا کرنے والا کوئی اور نہیں بلکہ خود لڑکی کے خاندان والے نکلے، اغوا کی اس واردات میں 6 افراد ملوث نکلے جن میں لڑکی کا بھائی اور والد بھی شامل تھا۔

پولیس کے مطابق لڑکا لڑکی ایک دوسرے سے محبت کرتے ہیں، لڑکی کے گھر والے لڑکے کے سخت خلاف تھے اسی لیے اُنہوں نے بھاگ کر شادی کرنے کا ارادہ کیا۔

پولیس کا کہنا ہے کہ بازیابی کے بعد لڑکی کو اُس کے خاندان کے حوالے کر دیا گیا ہے۔ لڑکی کے گھر والوں نے میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا کہ اُ ن کی بیٹی ابھی بالغ نہیں ہے جبکہ 24 سالہ لڑکے اور اُس کے خاندان والوں کا کہنا ہے کہ لڑکی بالغ ہے اوراُس نے اپنی مرضی سے بھاگ کر شادی کی تھی۔

بین الاقوامی خبریں سے مزید