آپ آف لائن ہیں
جنگ ای پیپر
پیر 17؍ذوالحجہ 1440ھ 19؍اگست 2019ء
Namaz Timing
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

مرید قتل ، عینی شاہد و عاطف کے ڈرائیور کا اقدام خود کشی، پولیس لاعلم

کراچی ( اسٹاف رپورٹر ) ڈیفنس میں اینکر سمیت 2افراد کے قتل کے واقعے کے عینی شاہد اور مرکزی ملزم عاطف کے ڈرائیور کی خود کشی کی کوشش ، تشویشناک حالت میں اسپتال میں داخل کردیا گیا ،پولیس ایک روز تک اس واقعے سے لاعلم رہی، دوسری جانب ملزم عاطف زمان کے کھاتے داروں سے متعلق پولیس حکام نے اپنی ابتدائی رپورٹ تیار کرلی ہے،ذرائع کے مطابق ملزم عاطف نے26افراد سے ایک ارب 20کروڑ لے رکھے تھے جبکہ مبینہ انویسٹرز کو ایک ارب 56کروڑ 37 لاکھ 76 ہزار کی رقم ادا کرنی تھی۔ پولیس ذرائع کے مطابق مرید عباس سمیت 2افراد کے قتل کے عینی شاہد ندیم کے حوالے سے تفتیشی ٹیم کو انکشاف ہوا کہ اس نے اقدام خودکشی کی اور وہ کئی گھنٹوں سے اسپتال میں زیر علاج ہے، ندیم نے کیڑے مار دوا پی لی جسے حالت بگڑنے پر جناح اسپتال لایا گیا ،پولیس ذرائع کا کہنا ہے کہ ندیم کو بیان لینے کے لیے تفتیشی پولیس نے طلب کیا تھا تاہم وہ نہیں آیا جب ندیم کے بھائی سے پوچھا گیا تو اس نے بتایا کہ ندیم کی طبیعت خراب ہے ، عینی شاہد ندیم مرکزی ملزم عاطف زمان کا ڈرائیور بھی ہے ۔پولیس ذرائع کا کہناہے کہ اسپتال میں ندیم کے گھر والوں نے بتایا کہ کام دھندا نہ ہونے کے باعث اس نے اقدام خود کشی کی جبکہ ملزم ایک روز سے اسپتال میں داخل تھا اور پولیس کو اسکا علم ہی نہیں تھا ۔ اس سلسلے میں یہ

دیکھا جارہا ہے کہ تفتیشی ٹیم کی غفلت سامنے آئی تو انکے خلاف بھی کارروائی عمل میں لائی جاسکتی ہے ، ڈرائیور عدالت میں بھی پیش نہیں ہوا تھا اور نہ ہی تفتیشی ٹیم کے پاس آیا تھا ۔ دوسری جانب ملزم عاطف نے شراکت داروں سے کتنی رقم وصول کی اسکی رپورٹ تیار کرلی گئی ہے۔تفتیشی ذرائع کے مطابق ملزم عاطف نے مبینہ انویسٹرز کو ایک ارب 56 کروڑ 37 لاکھ 76 ہزار کی رقم ادا کرنی تھی، عاطف سرمایہ کاروں کو مجموعی رقم پر ماہانہ 30کروڑ 15 لاکھ بیس ہزار روپے منافع دیتا تھا ،مقتول مرید عباس عاطف زمان کو11کروڑ 72لاکھ50ہزار روپے دے چکا تھا ،رپورٹ کے مطابق مقتول مرید عباس کو دو کروڑ 93 لاکھ بارہ ہزار ماہانہ منافع ملنا تھا، عاطف مجموعی طور پر 26 افراد سے 1 ارب 20 کروڑ 25 لاکھ 6 ہزار کی رقم لے چکا تھا ، مقتول خضرحیات کے بھی عاطف زمان کے پاس ایک کروڑ 58 لاکھ روپے موجود تھے، دوسری جانب مالی دھوکہ دہی کی تحقیقات کے لیے پولیس چیف کو خط بھیجا گیا ہے ، پولیس ذرائع کا کہنا ہے کہ پولیس کے پاس صرف دوہرے قتل کی تفتیش کا مینڈیٹ ہے ،مالی فراڈ کے متاثرین میں سے کسی نے بھی کاروباری دھوکہ دہی کا مقدمہ درج کروانے کے لیے رابطہ نہیں کیا ،تفتیشی ٹیم نے نیب سے تحقیقات کے لیے کراچی پولیس چیف کو تحریری طور پر آگاہ کردیا۔ پولیس چیف نیب تفتیش کی درخواست آئی جی سندھ کو ارسال کریں گے جسکے بعد آئی جی سندھ نیب تفتیش کی درخواست چیف سیکریٹری سندھ کو ارسال کریں گے۔‎

اہم خبریں سے مزید