آپ آف لائن ہیں
جنگ ای پیپر
پیر11؍ ربیع الثانی 1441ھ 9؍ دسمبر 2019ء
Namaz Timing
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
تازہ ترین
آج کا اخبار
کالمز

وزیراعظم پاکستان کادورہ امریکہ

تحریر:علامہ عظیم جی…مانچسٹر
وزیر اعظم پاکستان کے دورہ امریکہ سے یہ بات واضح ہو چکی ہے کہ امریکہ کو پاکستان کی مدد کی ضرورت ہے، امریکہ افغانستان پر چڑھائی اور تہ و تیغ کرنے کیلئے پاکستان کو استعمال کرنے پر دباؤ دیتا تھا اور اب افغانستان سے اپنی افواج کو واپس نکالنے میں بھی پاکستان کو اپنی بیساکھی بنانا چاہتا ہے اس میں سب سے زیادہ جانی قربانی پاکستان کی بہادر فوج کو دینی پڑی تھی اور امریکہ نے پاک فوج سے مدد بھی حاصل کی اور اس کو بدنام کرنے اور ان کی حکمت عملی کو ناکام بنانے کی بھرپور مگر ناکام کوشش جاری رکھی -وزیر اعظم پاکستان عمران خان کا حالیہ دورہ اور اس میں صدر امریکہ ڈونلڈ ٹرمپ کی طرف سے مسئلہ کشمیر حل کرانے کے لئے ثالثی کا عندیہ دیا ہے۔ اس موقع پر وزیر اعظم پاکستان عمران خان کا جاندار موقف جس میں انہوں نے امریکہ کی طرف سے اپنے الائی پاکستان جس نے وفا کی حد کردی اور اپنے ہزاروں قیمتی افسر، جوان، سویلین تک کو جام شہادت نوش کرایا اتنی بڑی قربانی کے باوجود امریکہ نے پاکستان پر ڈرون حملے کرکے بے گناہ خواتین بچوں کا خون ناحق بہایا۔ وزیر اعظم کے اس جرأت مندانہ موقف کہ امریکہ کو پاکستان پر برابری کی بنیاد پر اعتماد کرنا چاہئے تھا اور آئندہ بھی کرنا چاہئے کیونکہ پوری دنیا کے سامنے پاکستان کی

ہزاروں قیمتی جانوں کی قربانی کھربوں ڈالر کا مالی نقصان اٹھانا پڑا اس کی قدر امریکہ کو کھل کر کرنی چاہئےاور اس کی تلافی بھی، وزیر اعظم عمران خان نے موقف اختیار کیا جس میں کہا گیا کہ امریکہ کو پاکستان میں رات کے اندھیرے میں اسامہ بن لادن پر حملہ کرنے کے بجائے پاکستان کے ساتھ انٹیلی جنس شیئر کرنی چاہئے تھی۔ آئی ایس آئی پاکستان کے مفاد کےلئے ہے اس کی قربانیاں سب سے زیادہ ہیں۔ عمران خان نے پاکستان میں امریکہ کی جاسوسی کرنے پر بھی تنقید کی کہ اپنے اتحادی ملک پاکستان میں امریکہ کو جاسوسی نہیں کرنی چاہئے تھی تاہم وزیر اعظم عمران خان نے عافیہ صدیقی کی رہائی کا بھی عمدہ طریقے سے دفاع کیا اور مسئلہ کشمیر کے حل کیلئے بامقصد مذاکرات کیلئے کھلے دل کا مظاہرہ کیا اور ر صغیر کے ایک ارب انسانوں کے امن خوشحالی کا معاملہ باور کرایا۔ اس کے علاوہ مسئلہ کشمیر کو عمدہ طریقے سے پوری دنیا کے سامنے امن عالم کا مسئلہ بنا کر پیش کیا جس سے کشمیریوں کی خود ارادیت و آزادی کی جدوجہد کو نئی جلا ملی ہے توقع ہے کہ بھارت کے ظلم وستم سے کشمیریوں کو جلد نجات ملے گی ۔ عمران خان کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے کشمیر کے معاملہ پر امریکی صدر ٹرمپ کی ثالثی کی پیشکش نے مظلوم کشمیری عوام میں امید کی کرن روشن کردی ہے۔ وزیر اعظم پاکستان عمران خان کے دورہ امریکہ کے موقع پر اوور سیز پاکستانیوں کو پاکستان میں قومی نمائندگی کیلئے الیکشن لڑنے کا حق دینے کی بات اہمیت کی حامل ہے۔ بیرون ملک رہنے والے پاکستانی سچے محب وطن ہیںاور اپنے وطن کی خوشحالی ترقی عالمی وقار کی سربلندی کیلئے ہمیشہ مالی قربانی دیتے آرہے ہیں ۔ اوورسیز پاکستانیوں کو ان کی آئندہ نسلوں کو حب الوطن بنانے کیلئے ان کو اپنے وطن میں نمائندگی کا حق ملنا چاہئے۔ ان کے حقوق کے تحفظ کی ضمانت کی وزیر اعظم پاکستان عمران خان کی یقین دہانی خوش آئند ہے۔ توقع ہے وزیر اعظم وطن واپسی پر اپوزیشن کو معیشت اور دیگر قومی امور میں اعتماد میں لے کر احتساب اور انتقام کے تاثر کو ختم کرکے ملک کی ترقی خوشحالی کی طرف توجہ دیں گے اور پاکستان کو مزید عزت وقار دلوائیں گے۔

یورپ سے سے مزید