آپ آف لائن ہیں
جنگ ای پیپر
اتوار17؍ ربیع الثانی 1441ھ 15؍ دسمبر 2019ء
Namaz Timing
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
تازہ ترین
آج کا اخبار
کالمز

آرمی چیف کے معاملے پر حکومت کے پاس اکثریت نہیں، مصطفیٰ کمال

پاک سر زمین پارٹی کے سربراہ مصطفیٰ کمال نے کہا ہے کہ آرمی چیف کے معاملے پر حکومت کے پاس اکثریت نہیں، حکومت کو معاملے پر لچک کا مظاہرہ کرنا چاہیے۔

احتساب عدالت میں پیشی کے بعد سربراہِ پی ایس پی مصطفیٰ کمال نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ حکومت کی جانب سے اپوزیشن کو مسلسل ٹارگٹ کیا جا رہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ حکومت سخت زبان استعمال کر رہی ہے، وہ جانتی ہے کہ اسے اپوزیشن کی ضرورت ہے، موجودہ صورتِ حال میں سرمایہ کاری کیسے آئے گی؟

مصطفیٰ کمال نے کہا کہ وزیرِ اعظم عمران خان نے اپوزیشن کو 18 ماہ میں گالیاں ہی دی ہیں، وہ مودی سے بات کرنے کے لیے تیار ہیں مگر اپوزیشن سے بات کرنے کے لیے تیار نہیں۔

انہوں نے کہا کہ ملک اس وقت خطرناک آئینی بحران میں داخل ہوگیا ہے، وزیر اعظم اور ان کے وزراء نے تیز و تند لہجہ اختیار کر رکھا ہے، حکومت تمام جماعتوں کو ساتھ لے کر چلے۔

انہوں نے مزید کہا کہ آرمی چیف کی مدتِ ملازمت میں توسیع اور آئین میں ترمیم کے لیے پارلیمنٹ کو اپنا کردار ادا کرنا ہوگا۔

چیئرمین پی ایس پی نے چیئرمین پی پی پی کو مشورہ دیتے ہوئے کہا کہ بلاول بھٹو زرداری سندھ میں ایسا اسپتال بنوائیں جہاں ان کے والد صاحب کا علاج ہو سکے۔

اس سے قبل عدالت میں ساحل کی سرکاری اراضی کی غیر قانونی الاٹمنٹ ریفرنس کی سماعت میں چیئرمین پاک سر زمین پارٹی سید مصطفیٰ کمال اور دیگر ملزمان عدالت میں پیش ہوئے۔

نیب کے تفتیشی افسر عبدالفتح عدالت میں پیش نہیں ہوئے، تفتیشی افسر کی عدم حاضری پر عدالت نے اظہارِ برہمی کرتے ہوئے کیس کی مزید سماعت 23 دسمبر تک ملتوی کر دی۔

قومی خبریں سے مزید