| |
Home Page
پیر 25 محرم الحرام 1439ھ 16 اکتوبر 2017ء
October 21, 2016 | 12:00 am
شام 7 بجے دکانوں کی بندش صرف تجویز تھی، حتمی فیصلہ تاجروں کو اعتماد میں لینے کے بعد کیا جائے گا، منظور وسان

Todays Print

کراچی(اسٹاف رپورٹر)صوبائی وزیر صنعت و تجارت منظور حسین وسان نے کہا ہے کہ وزیراعلیٰ سندھ نے صرف شادی ہالوں کو رات 10بجے بند کرنے کا کہا تھا جبکہ شام 7بجے مارکٹیں اور دکانیں بند کرنے کے حوالے سے صرف تجویزدی تھی ،دکانیں اور مارکٹیں بند کرنے کا حتمی فیصلہ تاجروں کو اعتماد میں لینے کے بعد کیا جائیگا، تاجر برادری نے مارکٹیں اوردکانیں بند کرنے پر اپنی الگ الگ آراء دیں ہیں،پر فیصلہ سندھ حکومت کوکرنا ہے۔ یہ بات انہوں نے جمعرات کو اپنے دفتر میں اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہی،اجلاس میں مشیر اطلاعات مولابخش چانڈیو، مشیر قانون بیرسٹرمرتضی وہاب، مشیر محنت سعید غنی، سیکریٹری صنعت و تجارت عبدالرحیم سومرو، سیکریٹری محنت عبدالرشید سولنگی، تاجر رہنما عبدالصمد، اختیار بیگ، رضوان عرفان، عتیق میر سمیت دیگر ارکان نے شرکت کی،انہوں نے کہا کہ اجلاس میں تاجروں نے مارکٹین اور دکانیں بند کرنے سے متعلق مختلف اوقات کی تجاویز دیں ہیں لیکن حتمی فیصلہ وزارتی کمیٹی یکم نومبر سے پہلے کرلے گی، رات دیر تک کھلنے والی مارکٹیں بند ہونی چاہیں، سینما گھروں کے اوقات بازاروں اورمارکیٹوں سے مختلف ہوگی، انہوں نے مزید کہا کہ تاجر برادری سے رائے لینے کا مقصد ان کو اعتماد میں لینا تھا اور ان کی آراء کو حتمی شکل کے بعد وزیر اعلیٰ سندھ تک پہنچایا جائے گا،کراچی والوں کے متعلق دیر سے سونے اوراٹھنے کے تاثر کو ختم کرنا ہے، سندھ حکومت نے کراچی کو منفردبنانے کا فیصلہ کرلیا ہے، کاروبارجلد بند کرانا انہی اقدامات کی ایک کڑی ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ تقریباًتمام تاجرحکومتی فیصلہ پر رضامند ہوگئے ہیں امید ہیں کہ باقی بھی اپنا فیصلہ مثبت دیں گے،انہوں نے کہا کہ تاجر بھی اچھے فیصلے کریں، اس سے حکومت ہی نہیں بلکہ تاجروں کو بھی فائدہ ہوگا، ایک سوال کے جواب میں صوبائی وزیر نے کہا کہ5نومبر تک جو آنے والے دن ہیں وہ اہم ہیں ۔