| |
Home Page
جمعہ 27 صفر المظفر 1439ھ 17 نومبر 2017ء
October 21, 2016 | 12:00 am
پاکستان اور امریکا کا تجارتی وسرمایہ کاری روابط کو نجی شعبے تک بڑھانے پر اتفاق

Todays Print

اسلام آباد (نمائندہ جنگ )پاکستان اور امریکا کے مابین پاکستانی برآمد کنندگان کیلئے امریکی جی ایس پی پروگرام تک رسائی کےپروگرام کی تجدید پر اتفاق ہوگیا ہے،دونوں ملکوں کے درمیان دوطرفہ تجارتی اور سرمایہ کاری روابط کو نجی شعبے تک بڑھانے پر بھی اتفاق ہواہے ، پاکستان کے برآمدکنندگان کو امریکا کے جی ایس پی پروگرام تک رسائی کیلئےاس پروگرام کی تجدید کی جائیگی، اس کیلئے پاکستان سے اعلیٰ سطح کا تجارتی و زرعی وفد 2017میں امریکا کا دورہ کرے گا اس کے ساتھ ساتھ 20سے زائد اضافی پاکستانی وفود کو امریکی تجارتی نمائشوں میں شرکت کیلئے سہولیات فراہم کرنے پر بھی مشترکہ طورپر اتفاق کیا گیا ، اس کا اعلان پاک امریکا ٹریڈ اینڈ انوسٹمنٹ فریم ورک ایگریمنٹ ( ٹی آئی ایف اے ) کے 8ویں کونسل اجلاس کے اختتام پر مشترکہ اعلامیہ میں کیا گیا ، دو روزہ اجلاس اسلام آباد میں ہوا، اجلاس میں امریکا کی نمائندگی امریکی تجارتی نمائندے مائیکل بی فورمین اور پاکستان کی نمائندگی وزیر تجارت خرم دستگیر خان نے کی ۔ٹی آئی ایف اے کی کونسل کے اجلاس کے اہم نتائج میں امریکی ترجیحات کا عمومی نظام  (جی ایس پی) پاکستانی برآمد کنندگان کیلئے پروگرام کی دوبار تجدید تک رسائی، 2017 ء میں پاکستان کی طرف سے امریکا میں ایک اعلی ٰسطحی تجارتی زرعی وفد کی مشترکہ قیادت کرنے، اس کے ساتھ ساتھ امریکی تجارتی شو کیلئے 20 سے زائد اضافی پاکستانی وفود بھیجنے کی کی سہولت شامل ہیں اس کے علاوہ ملکی دواساز فرموں، خاص طور پر کاروباری ماحول سے متعلق بہتر ی لانا، پاکستانی حکومت سے مذاکرات،پاکستانی آم کی درآمد کیلئے شمال مشرقی امریکا میں ایک نباتاتی سینیٹری شعاع ریزی سہولت کی نشاندہی ، امریکی محکمہ دفاع کی افغانستان میں امریکی معاونتی کارروائیوں کی خریداریوں کی بولی میں حصہ لینے کے عمل کی آگاہی میں بہتری کی امریکی سہولت،اور امریکاپاکستان کے کاروباری مواقع بارے آئندہ کانفرنس کے شیڈول میں پیش رفت بھی شامل ہیں ۔پاکستان کی ملبوسات کی صنعت کیلئے  امریکی مارکیٹ تک رسائی کی بہتری کیلئے درخواست کی تجدید اور امریکی محکمہ خارجہ کی ایڈوائیزری اور تجارت پر اس کے اثرات بارے خدشات کا ذکر کیا،  امریکا پاکستان بزنس ایسوسی ایشنز ٹی آئی ایف اے کے اس اجلا س کےبعد فوری طور پر پاکستانی برآمد کنندگان کو امریکی جی ایس پی پروگرام کے حوالے سے آگاہی کی تقریب منعقد کرے گی ،مزید یہ کہ دونوں وفود  نے باہمی تجارت اور سرمایہ کاری کے لائحہ عمل پر تیز تر عمل درآمد کیلئے   -2017 2016   کے 5سالہ توسیعی جوائنٹ ایکشن پلان کو حتمی شکل دیدی ۔  اس  لائحہ عمل پر عملدر آمد کا تسلسل کونسل کے آئندہ 12 ماہ میں ہونے والے بڑے کاموں میں شامل ہو گا ۔ دونوں ا طراف نے باہمی طور پر فائدہ مند اقتصادی تعلقات اور ان تعلقات کی مضبوطی کیلئے کام کرنے کے عزم کا اعادہ کیا۔انہوں نے تجارتی اور سرمایہ کاری دائرہ کار کے معاہدہ کی کونسل کا آئندہ اجلاس2017 ء میں  امریکا میں منعقد کرنے پربھی اتفاق کیا۔ ووزیر تجارت خرم دستگیر خان اورامریکی تجارتی نمائندے مائیکل بی فرومن نے  پاک امریکہ تجارتی اور سرمایہ کاری کے فریم ورک ایگریمنٹ ( ٹی آئی ایف اے ) کی کونسل کے آٹھویں اجلاس کی اسلام آباد میں مشترکہ طور پر میزبانی کی، امریکی تجارتی نمائندہ فرومن نے اقتصادی اصلاحات کے پروگرام  پر عمل درآمد میں پیش رفت کی تعریف کی جس سے پاکستان کی معیشت مستحکم ہو گئی ، انہوں نے تعاون جاری رکھنے کا پختہ عزم بھی کیا۔