Raza Ali Abidi - Urdu Columns Pakistan | Jang Columns
| |
Home Page
اتوار 03 محرم الحرام 1439ھ 24 ستمبر 2017ء
رضا علی عابدی
دوسرا رخ
January 11, 2013
اردو لغت میں اضافہ مبارک ہو

محبان اردو کو مبارک ہو۔ ان کی زبان اور مالدار ہوگئی کہ اس میں ایک نئی گالی شامل ہوگئی ہے اور وہ ہے ’ دہری شہریت‘۔کسی کی تضحیک مقصود ہو، کسی کی عزت خاک میں ملانی ہو، دنیا کی نگاہوں میں ذلیل و رسوا کرنا ہو، اُس کے دامن پر دہری شہریت کا داغ لگا دیجئے عمر بھر خوار ہوتا رہے گا، منہ چھپائے چھپائے پھرے گا اور ڈرے گا کہ کسی روز یہ نہ ہو کہ...
January 04, 2013
جب دل کی ایک دھڑکن لڑکھڑاتی ضرور ہے

وطن چھوڑ کر برطانیہ میں بسنے کے بہت فائدے ہوں گے مگر ایک بڑا نقصان ہے اور وہ یہ کہ ہم ولایت میں ہیں اور دل کسی حال وطن سے جدا ہونے پر آمادہ نہیں۔ہم وہاں ہیں جہاں سے ہم کو اپنی سرزمین کی ذرا ذرا سی خبر مل رہی ہے۔ اس میڈیا کی برق رفتاری ہر روز بجلی بن کر گرتی ہے اور ہر روز ہمارے دل و دماغ کے خرمن کو پھونکے جاتی ہے۔ پاکستان سے صبح شام جی کو...
December 28, 2012
باہر کیچڑ بہت ہے

اب کے کرسمس کا دن گرج چمک سے شروع ہوا۔ بارش کیا برسی گویا بڑا دن منانے والوں کی حسرتوں پر اوس پڑ گئی۔ ان بے چاروں کا پرانا ارمان ہے کہ کرسمس کے دن آسمان سے تازہ تازہ برف گرے، سارا منظر سفید ہوجائے، پورا ماحول صاف ستھری سفید چادر اوڑھ لے اور بچّے خوشی سے دیوانے ہو جائیں، میدانوں میں دوڑیں، برف پر پھسلیں، ایک دوسرے پر برف کے گولے...
December 21, 2012
بچی کے پاؤں چومنے کی خواہش

ادھر دو چار روز سے کچھ عجب سے خیالات چلے آرہے ہیں اور وہ یہ کہ امریکہ اور پاکستان میں کچھ باتیں کتنی مشترک ہیں۔ اسی طرح برطانیہ اور پاکستان میں بعض حالات ایک جیسے ہیں۔ امریکی ثقافت کو گن کلچر کہا جاتا ہے یعنی اسلحہ کا عام چلن جہاں ہر شخص ہتھیار لئے پھرتا ہے۔ سوچئے تو خیال ہوتا ہے کہ یہی حال پاکستان کا ہے، گھر گھر اسلحہ موجود ہے۔...
December 16, 2012
آندھیوں نے آنا چھوڑ دیا ہے.

برطانوی عدالت نے حیدرآباد دکن کی ایک خاتون کو قتل کی مجرم قرار دیا ہے۔ 33 سالہ سارہ ایج پر الزام تھا کہ اس نے اپنے سات سال کے بیٹے یاسین کو مار مار کر ہلاک کیا۔ بچّے کا قصور یہ تھا کہ اس کو قرآن حفظ کرنے میں دشواری ہو رہی تھی۔ سارہ نے اپنا جرم چھپانے کے لئے بیٹے کی لاش بسترمیں ڈال کر اس میں آگ لگادی۔ آگ بجھانے والا عملہ یہی سمجھا کہ وہ...
December 07, 2012
محلہ مولویانہ کی افسانہ نگار.

انٹرنیٹ میں ہزار خرابیاں ہوں گی لیکن ایک خوبی بھی ہے، خبر لمحہ بھر میں پہنچ جاتی ہے۔ ابھی کچھ روز کی بات ہے میرے کمپیوٹر کے پردے پر پیغام آیا ”برطانیہ کی معروف افسانہ نگار صفیہ صدیقی انتقال کر گئیں“۔ مرحومہ کا قیام میرے گھر سے کوئی دس میل کے فاصلے پر ہوگا، ان کے انتقال کی خبر وفات کے فوراً بعد چار ہزار میل دور کراچی سے ان کے بھانجے...
December 01, 2012
جلوس ایسے بھی ہوتے ہیں

اس بار عشرہء محرّم کے دوران ہم نے ایک جلوس میں شرکت کی۔لندن کے جاڑے اپنے شباب پر تھے اور جس بارش کی لئے یہ شہر بدنام ہے وہ مسلسل برسے جارہی تھی۔ ایسے میں کئی ہزار افراد باطل کے خلاف اور حق کے حق میں نعرے لگاتے جارہے تھے۔ وہی ظلم و ستم کا عنوان تھا، وہی جبر و استبداد سے نفرت کا اظہار تھا۔ مجمع کا سب سے مقبول نعرہ تھا ’ فلسطینیو، ہم...
November 24, 2012
قیامت میں جینے کا ہنر

یہ کالم ماہ نومبر کی اکیسویں تاریخ کو لکھا جارہا ہے یعنی جنوبی امریکا کی قدیم مایا تہذیب کے ریاضی دانوں کے حساب سے دنیا کے وجود کا یہ آخری مہینہ ہے۔ انہوں نے چار ہزار سال پہلے پتھروں پر نقوش کھود کر جو کمپیوٹر بنایا تھا اس کی مدد سے قیامت تک کام آنے والا ایک کیلنڈربھی تیار کیا تھا ۔ وہ کیلنڈراس سال دسمبر کی اکیسویں تاریخ کو ختم ہونے...
November 16, 2012
پردہ پوشی کا چلن

اس مہینے کے خاتمے پر میں 76برس کا ہو جاؤں گا۔ یہ نہیں کہا جاسکتا کہ 76برس کا عرصہ طویل ہوتا ہے یا نہیں لیکن ان برسوں میں دنیا نے جو رنگ ڈھنگ بدلے ہیں اور جیسا روپ نکھارا یا بگاڑا ہے اس کا حساب لگایا جائے تو یہ عرصہ غضب کا طویل محسوس ہوتا ہے۔ اس عرصے میں ہم نے پنسلون سے لے کر کمپیوٹر کی ایجاد تک، کیا نہیں دیکھا۔ طب کے علم نے کیسی کیسی...
November 09, 2012
دائرہ مکمل ہوتا ہے

پورے پچپن برس ہوئے، سال کے یہی آخری مہینے تھے جب میں روزنامہ جنگ کراچی سے وابستہ ہوا تھا۔ سنہ1857ء کی جنگِ آزادی کی صد سالہ تقریب منائی جا رہی تھی اور سوویت یونین کا پہلا مصنوعی سیارچہ اسپوٹنک خلا میں گیا تھا۔ جس دنیا کو ہم پیچھے چھوڑ آئے تھے اُس کی یادکچھ نیم دلی سے منائی گئی تھی اور جس خلائی دوڑ کا آغاز ہورہا تھا اُس کی دھوم مچی تھی۔...