آپ آف لائن ہیں
کومل زیدی
کومل زیدی | 12 اپریل ، 2018

پاکستان کے چند ’جنت نظیر‘ مقامات

پاکستان کے چند ’جنت نظیر‘ مقامات

خوبصورت ملکوں کا ذکر ہوتا ہے تو ہمیشہ سوئٹزرلینڈ، فن لینڈ، اٹلی، کینڈا، فرانس اور دیگر ملکوں کی ہی بات کی جاتی ہے مگر ہم اپنا ملک، اپنی زمین ’پاکستان‘ کو کیسے بھول جاتے ہیں جو ’قدرتی خوبصورتی‘ میں کسی سے پیچھے نہیں۔


پاکستان کے چند ’جنت نظیر‘ مقامات، جنہیں دیکھ کر آپ سوئٹزر لینڈ، گریس کو بھی بھول جائیں گے۔

ہنزہ ویلی :

پاکستان کے چند ’جنت نظیر‘ مقامات

پاکستان کی خوبصورت ترین وادی ہنزہ گلگت بلتستان میں واقع ہے۔ یہ واد ی پہاڑوں اور دریائوں کا گھر کہلائی جاتی ہے کیونکہ یہاں مختلف قسم کی بے شمار پہاڑ موجود ہیں اور دریا بہتے ہیں ۔ سردی کے موسم میں اس وادی کی خوبصورتی میں مزید اضافہ ہوجاتا ہے جب پہاڑ اور زمین ہرے بھرے پتوں اور برف کی چادر اُوڑھ لیتے ہیں۔

پاکستان کے چند ’جنت نظیر‘ مقامات

اس سے زیادہ دلکش وادی ہنزہ اس وقت بھی لگتی ہے جب خزاں کے موسم میں درختوں پر لال اور نارنجی رنگ کے پتوں کا عکس برف پر پڑتا ہے، تب ہی اسے ’زمین پر جنت‘ کہا جاتا ہے۔

یہاں بڑی تعداد میں برفانی چیتے، مارخور اور سرخ دھاری دار لومڑیاں پائی جاتی ہیں۔

جھیل سیف الملوک :

پاکستان کے چند ’جنت نظیر‘ مقامات

جھیل سیف الملوک کا شمار بھی پاکستان کے’جنت نظیر‘ مقامات میں ہوتا ہے۔ یہ وادی کاغان میں واقع جھیل ہے جس کے لیے یہ بات مشہور ہے کہ یہاں ’رات میں پریاں اترتی ہیں‘۔

نیلے رنگ کے شفاف پانی سے بھر ی اس جھیل کی خوبصورتی اس کا’ آسمان بلند پہاڑوں ‘کے بیچ واقع ہونا ہے۔ جھیل سیف الملوک کا پانی اس حد تک شفاف ہے کہ اس کے گرد پہاڑوں کا عکس اس پر نمایاں ہوتا ہے جسے دیکھ کر کوئی یقین نہ کرے کہ یہ عکس ہےبلکہ ایسا گمان ہوتا ہے کہ جھیل کے اندر پہاڑ ہیں۔

پاکستان کے چند ’جنت نظیر‘ مقامات

سردیوں میں اس جھیل پر پانی کا نام و نشان تک نہیں ہوتا بلکہ پوری جھیل پرسفید برف کی تہہ جمی ہوتی ہے۔ اس جھیل کا نظارہ کرنے کے لیے سیاح دور دور سے آتے ہیں اور نہ صرف پاکستان بلکہ غیر ملکی سیاح بھی یہاں کا رخ کرتے ہیں۔

سوات:

پاکستان کے چند ’جنت نظیر‘ مقامات

پاکستان کے صوبے خیبر پختون خوا میں واقع وادی سوات کو ایشیا کا ’سوئٹزرلینڈ‘ کہا جاتا ہے۔ سوات کو یہ خطاب ملکہ برطانیہ کی جانب سے 1961میں پاکستان کےدورے پردیاگیا تھا۔

پاکستان کے چند ’جنت نظیر‘ مقامات

سوات ہریالی، بلند پہاڑوں اور صاف شفاف جھیلوں پر مشتمل وادی ہےجو ملک کے سیاحتی ادارے کو ایک بڑی آمدنی فراہم کرنے میں سرفہرست ہے۔

وادی نیلم :

پاکستان کے چند ’جنت نظیر‘ مقامات

وادی نیلم آزاد کشمیر میں واقع ہے۔ اس وادی کے ساتھ ہی بہتے ’دریائےنیلم ‘ کی وجہ سے اس کا نام بھی وادی نیلم پڑ گیا۔ نیلم ایک نیلے رنگ کے قیمتی پتھر کا نام ہے ، اس جھیل کا پانی گہرا نیلا ہونے کی سبب اسے دریائے نیلم کا نام دیا گیا۔

پاکستان کے چند ’جنت نظیر‘ مقامات

یہ وادی پاکستان کی نہایت خوبصورت ترین وادیوں میں سے ایک ہے،جہاں بے شمار پانی کے چشمے بہتے ہیں، جہاں پہاڑ اور سبزہ بھی موجود ہے۔ نیز ہر قسم کا ’قدرتی حسن‘ یہاں پایا جاتا ہے۔

شنگریلا ریزورٹ (اسکردو):

پاکستان کے چند ’جنت نظیر‘ مقامات

پاکستا ن کے تفریحی مقامات میں ایک نام ’شنگریلا ریزورٹ‘ بھی شامل ہے جو اسکردو سے کچھ دور واقع ہے۔ اس مقام کی خوبصورتی دراصل وہاں موجود ایک ریسٹورنٹ ہےجو کہ ایک ایئر کرافٹ کی طرز پر بنایا گیا ہے۔

پاکستان کے چند ’جنت نظیر‘ مقامات

شنگریلا ریزورٹ اسکردو شہر سے بذریعہ گاڑی تقریباً 40 منٹ کی دور ی پرہے۔

وادی گوجال:

پاکستان کے چند ’جنت نظیر‘ مقامات

وادی گوجال وہ علاقہ ہے جہاں سے پاکستان شروع ہوتا ہے، یہ چین اور افغانستان کے ساتھ ہی پاکستان کا سرحدی علاقہ ہے۔ یہ وادی بلندی پر واقع ہونے کی باعث سارا سال برف سے ڈھکی رہتی ہے۔