آپ آف لائن ہیں
جمعہ 10؍محرم الحرام 1440ھ 21؍ستمبر2018ء
Namaz Timing
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

بھارت کے سابق وزیر اعظم اٹل بہاری واجپائی 93سال کی عمر میں دنیا سے چل بسے۔ وہ کافی عرصے سے بیمار تھے۔

بھارتی میڈیا کے مطابق بھارت کے تین مرتبہ وزیر اعظم بننے والے93 سالہ اٹل بہاری واجپائی کی حالت تشویشناک تھی جس کی بنا پر انہیں اسپتال انتظامیہ نے انتہائی نگہداشت یونٹ میں منتقل کر دیا تھا ۔وہ اس وقت آل انڈیا انسٹیٹیوٹ آف میڈیکل سائنسز (ایمس) میں زیر علاج تھے اور آج شام ان کا انتقال ہوا۔

بھارتی وزیراعظم نریندر مودی نے آج صبح ہسپتال میں ان کی عیادت کی تھی۔

انہیں رواں ماہ جون میں اسپتال داخل کرایا گیا تھا جہاں ڈاکٹروں نےان کی سانس کی نالی میں انفیکشن بتایا تھا۔ ساتھ ہی انہیں گردوں کا بھی مرض لاحق تھا۔

اٹل بہاری واجپائی نے 1940 میں سیاست میں قدم رکھا تھا، 1942ء کی ”بھارت چھوڑو“ تحریک میں پرجوش حصہ لیا،تحریک کی شدت کو دیکھ کر تحریک کے شرکا کو پکڑا جانے لگا تو یہ بھی گرفتار ہو گئے اور انہیں 24 دنوں کی قید بھگتنی پڑی۔

اٹل بہاری واجپائی تین  مرتبہ ملک کے وزیر اعظم رہے۔

وہ1996ء میں وہ صرف 13دنوں تک ہی وزیر اعظم کے عہدے پر برقرار رہ سکے تھے۔ 1998ء میں دوسری مرتبہ وزیر اعظم بننے کے بعد ان کی حکومت 13ماہ قائم رہی۔ 1999ء میں تیسری مرتبہ 5سال تک وزیر اعظم بن کر حکومتی کارکردگی کی مدت پوری کی۔


واجپائی ملک کے صف اول کے سیاسی رہنما کے ساتھ ہندی کے عمدہ شاعر بھی تھے۔ سیاسی مصروفیات میں بھی انہوں نے شاعری کو اپنے سینے سے لگائے رکھا۔

واجپائی جنہیں اعتدال پسند قائد کہا جاتا تھا انہوں نے اپنی شاعری میں بھی اپنے ان جذبات کی ترجمانی کی ۔

اپنے طویل سیاسی سفر میں واجپائی نے وقت کے ہر سلگتے مسئلے پر نظمیں کہی ہیں۔

Chatاپنی رائے سے آگاہ کریں