آپ آف لائن ہیں
جنگ ای پیپر
جمعرات14؍ ذیقعد1440ھ18؍جولائی 2019ء
Namaz Timing
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

کراچی کے مختلف علاقوں میں بجلی کی لوڈ شیڈنگ کا دورانیہ 10 گھنٹوں سے تجاوز کرگیا،وفاق کی جانب سے اضافی گیس فراہم کرنے کے باوجود غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ بھی جاری ہے، شدید گرمی میں بجلی سے محروم شہریوں کی حالت غیر ہوگئی۔

کے الیکٹرک نے صورتحال کی ذمے داری گیس پریشر میں کمی پر ڈالی جسے وفاقی حکومت نے سختی سے مسترد کردیا ہے۔

کراچی آج بھی ہیٹ ویو کی لپیٹ میں رہےگا، محکمہ موسمیات کے مطابق سمندری ہوائیں معطل رہیں گی اور پارہ 39سے41 ڈگری سینٹی گریڈ تک جا سکتا ہے۔

ادھرشدید گرمی اور حبس کے موسم میں شہر کے مختلف علاقوں میں لوڈ شیڈنگ کا دورانیہ10گھنٹوں سے تجاوز کرگیا ہے۔ لیاری، کورنگی، گلستان جوہر، لانڈھی، ملیر، شاہ فیصل، گلستان جوہر، لیاقت آباد، نیوکراچی،اورنگی ٹاؤن، بلدیہ ٹاؤن، منگھوپیر اور کھارادر سمیت شہر کے مختلف علاقوں میں لوڈ مینجمنٹ کے نام پر بجلی بند کر دی جاتی ہے۔

کے الیکٹرک ترجمان نے دعویٰ کیا ہے کہ کراچی میں گرمی کی وجہ سے ڈیمانڈ میں اضافہ ہوا ہے۔ گیس پریشر میں کمی کے باعث کچھ پلانٹس کی پیداواری صلاحیت متاثر ہے۔ تاہم دعوے کو وفاقی وزیر عمر ایوب خان نے مستردکر دیا اورکہا کہ ایس ایس جی سی کے الیکٹرک کو ضرورت سے زیادہ گیس فراہم کررہا ہے اور گیس پریشر میں کمی کا دعویٰ غلط ہے۔

وفاقی وزیرکا کہنا ہے کہ کے الیکٹرک کو مزید 150میگا واٹ بجلی دینے کی منظوری دی ہے۔ لیکن کے الیکٹرک کا ترسیلی نظام ہی موجود نہیں جس کی وجہ سے ابھی تک فراہمی ممکن نہیں ہوسکی۔

Chatاپنی رائے سے آگاہ کریں