• بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

میٹابولزم کیا ہے اسے کس طرح بہتر بنایا جائے؟

یہ بات ایک حقیقت ہے کہ انسان فطرت کے جتنا زیادہ قریب رہتا ہے، وہ اتنا ہی خوش، توانا اور صحت مند رہتا ہے۔ اگرچہ میڈیکل سائنس میں بے شمار ترقی کی بدولت ایسی چیزیں بھی موجود ہیں، جو انسانی جسم اور حیات کو بہتر بنانے میں مدد فراہم کرتی ہیں، تاہم ان کا مقابلہ پھر بھی قدرتی اشیا سے نہیں کیا جاسکتا۔ پھل، سبزیاں، پانی اور دودھ جیسی قدرتی اشیا کا شمار ان چیزوں میں ہوتا ہے جو انسانی جسم کے ’میٹابولزم‘ کو مضبوط بناتی ہیں۔

میٹابولزم کیا ہے؟

’میٹابولزم‘ در اصل اس نظام کو کہا جاتا ہے، جس کے ذریعے کھانے پینے کی چیزیں مادہ حیات میں تبدیل ہوجاتی ہیں، یعنی غذا کے جسم کے جزو میں تبدیل ہونے کو ’میٹابولزم‘ کہتے ہیں۔ ہیلتھ جرنل میں شائع ایک مضمون کے مطابق انڈے، گوشت، پانی، دودھ، گندم سے بنی غذائیں، کافی اور گرین ٹی سمیت دیگر چیزیں ’میٹابولزم‘ کے لیے مفید ہوتی ہیں، ان چیزوں سے انسانی جسم مضبوط اور توانا بنتا ہے۔ دودھ جہاں انسانی جسم کو خوبصورت بنانے میں کردار ادا کرتا ہے، وہیں یہ ہڈیوں کو بھی مضبوط کرتا ہے۔

پانی

یہ آپ جانتے ہی ہوں گے کہ پانی کو قدرتی اشیا میں سب سے نمایاں اہمیت حاصل ہے۔ پانی انسانی جسم کے نظام کو توانا رکھنے سمیت اس میں کیلوریز اور طاقت کو بڑھاتا ہے۔

بغیر چربی والا گوشت

گوشت میں آئرن پایا جاتا ہے اور آئرن کی وجہ سے یہ انسانی جسم کے لیے فائدہ مند ہوتا ہے۔

ہر قسم کی مرچ

یہ ہم جانتے ہیں کہ زیادہ ترلوگ مرچوں کو پیٹ کے لیے خطرناک سمجھتے ہیں۔ تاہم، مرچوں میں وٹامن سی پایا جاتا ہے، جو انسانی صحت کے لیے لازمی ہے مگر اس کا استعمال اعتدال کے ساتھ کیا جانا چاہیے۔

کافی/ گرین ٹی

کافی اور گرین ٹی میں پائے جانے والے اجزاء ’میٹابولزم‘ کو درست رکھنے میں مدد دیتے ہیں۔

میٹابولزم کیسے بہتر بنایا جائے؟

وزن کم کرنے میں میٹابولزم اہم کرداراداکرتاہے، اسی لیے اگر کسی انسان کامیٹابولزم سست ہوتو وہ ڈائٹ کے باوجود وزن کم نہیں کرپاتا۔ وزن کم کرنے اور میٹابولزم کو تیز کرنے کے کچھ طریقے ہیں جنھیں جان کرآپ اپنی مشکل آسان کرسکتے ہیں۔ اس کا آسان طریقہ یہ ہے کہ دن بھرمیں جتنی بھی کیلوریز آپ حاصل کرتے ہیں، اس سے زیادہ جلائیں اور تیزی سے وزن گھٹائیں۔ وزن میں کمی کرنے کے لیے کوئی جادوئی طریقہ نہیں ہے۔ ہر انسان کے لیے اس کا طریقہ کار مختلف ہوتا ہے۔ یاد رکھیںوزن کم کرنے میں صرف ایک چیز اہم کردار ادا کرتی ہے اور وہ ہے آپ کا میٹابولزم ۔

میٹابولزم ایک کیمیائی عمل ہے جس میںخلیات کھانے کو توانائی میں تبدیل کرتے ہیں یعنی یوں کہہ لیں کہ کھانے کوتیزی سے ہضم کرتے ہیں۔ہارمون جیسے کارٹیسول نائٹروجن فضلہ کوختم کرتے ہیں۔ جس طرح ہرعمل کاردعمل ہوتا ہے بالکل اسی طرح اس کیمیائی ردعمل میں بھی توانائی کی ضرورت رہتی ہے۔ جس کی وجہ سے آپ کے جسم سے تیزی سے کیلوریز جلتی رہتی ہیں۔ یعنی اگرآ پ کامیٹابولزم تیز ہوگا تو آپ تیزی سے وزن گھٹاسکتے ہیں۔

کیلوریز جلانے میں کسی بھی انسان کی عمر، جنس اورقد اہمیت رکھتا ہے۔ مثلاً اگر کوئی شخص لمبا، چوڑا اوروزن میں زیادہ ہو تو اسے زیادہ کیلوریز جلانے کی ضرورت ہوتی ہے۔ اسی طرح کوئی جسمانی نقص بھی میٹابولزم پر اثر انداز ہوتا ہے۔ ذیل میں بتائے گئے طریقوں پر عمل پیرا ہوکر آپ میٹابولزم کوتیزکرکے اپنے وزن میں نمایاں کمی کرسکتے ہیں۔

فعال رہیں

فعال یعنی سرگرم رہنے سے آپ کاجسم گرم رہتاہے جس سے میٹابولزم تیز ہوتا ہے۔ سرگرم رہنے سے پندرہ سے تیس فیصد تک کیلوریز جلتی ہیں۔ جتناآپ حرکت میں رہیں گے اتنی ہی زیادہ کیلوریز جلیں گی۔ اپنے لیے اہداف مقرر کریں، روزانہ چہل قدمی کریں یا پھرکوئی ایسی سرگرمی کاانتخاب کریں جس سے آپ متحرک رہ سکیں۔ باغبانی یا گھر اور باورچی خانے کے دیگر کاموں میں دلچسپی لیں، اپنے روزانہ کے معمولات میں ایسی سرگرمیاں شامل کریں جن سے آپ فعال رہ سکیں۔

پانی کی کمی نہ ہونے دیں

جسم میں پانی کی کمی کے باعث ہمارے جسم کا اہم عضو ’جگر‘ صحیح طرح سے کام نہیں کرپاتا جس کی وجہ سے میٹابولزم سست ہوجاتاہے۔ یہ بات تو اب آپ سمجھ ہی گئے ہوں گے کہ وزن کم کرنے کے لیے میٹابولزم کا تیز ہوناضروری ہے جو پانی کی کمی کے باعث سست ہوجاتا ہے۔ اسی لیے پانی میٹابولزم کی کارکردگی بڑھانے کے لیے انتہائی ضروری ہے۔ ڈی ہائیڈریشن کے سبب پٹھوں میں کھنچاؤ اورتھکاوٹ ہوتی ہے۔ اوسطاً روزانہ آٹھ سے دس گلاس پانی پیناصحت مندرہنے کے لیے ضروری ہے۔

مسالہ جات

مسالوں میں ایسے مرکبات پائے جاتے ہیں جووزن گھٹانے اورمیٹابولزم کو بڑھانے کے کام آتے ہیں۔ بے شک تیز مرچ مسالے صحت کے لیے نقصا ن دہ ہوتے ہیں لیکن مرچ مسالہ دار کھانا کھانے والوں کے لیے ایک خوشخبری یہ ہے کہ چٹ پٹے مسالے کھانے کے باعث میٹابولزم بھی تیز ہو جاتا ہے۔ مرچ ایک ایسی شے ہے جس کے استعمال سے دل کی دھڑکن تیز اوربلڈ پریشرکم ہوجاتاہے، ساتھ ہی میٹابولزم بھی تیز ہوتا ہے۔ اسی لیے اپنے روزمرہ کے کھانوں میں ہلکا پھلکا اور توازن کے ساتھ مرچ مسالہ شامل کریں اور میٹابولزم کوتیز کریں۔

وزن اٹھائیں

صرف ایک پاؤنڈ کی ویٹ لفٹنگ سے دن میں چھ کیلوریز جلائی جاسکتی ہیں۔فیٹ برننگ کے لیے ضروری ہے کہ وزن اٹھایا جائے۔ اس سلسلے میں جِم بہترین جگہ ہے، لہٰذا اسےاپنی روزمرہ روٹین کاحصہ بنائیں۔ باقاعدگی سے جِم جانے کے باعث نہ صرف میٹابولزم تیز ہوگا بلکہ آپ اپنی عمر پیچھے بھی لے جاسکتے ہیں یعنی بڑھاپے کواپنے آپ سے دوررکھ سکتے ہیں۔ اگرآپ اپنا میٹابولزم تیز کرنا چاہتے ہیں تو کوشش کریں کہ اگر روز نہیں تو ہفتے میں کم از کم دودفع جِم ضرورجائیں۔

پروٹین کا استعمال

جسم کو کیلوریز جلانے اور ہاضمے کے لیے توانائی کی ضرورت ہوتی ہے۔ کچھ کھانے ایسے ہوتے ہیں جنھیں ہضم کرنے کے لیے جسم کوزیادہ توانائی کی ضرورت ہوتی ہے۔ پروٹین کااستعمال آپ کے جسم کو زیادہ توانا رکھتا ہے۔ یہ پٹھوں کی ترقی اور نشوونما میں بھی اہم کردار ادا کرتا ہے۔ میٹابولزم کو تیز کرنے کے لیے یہ ایک اہم غذائی جزو ہے۔ جسمانی وزن کے مطابق روزانہ کی بنیاد پر پروٹین کی مناسب مقدارلینابہت ضروری ہے۔

صحت سے مزید