• بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

ہمارے ملک کے اکثر علاقوں میں سال کے بیشتر مہینوں میں گرمی رہتی ہے۔ یہی وجہ ہے کہ آب و ہوا گرم مرطوب ہونے کی وجہ سے جب بھی مکان یا فلیٹ خریدنے یا کرائے پر لینے کی بات آتی ہے تو سب کی اوّلین ترجیح ویسٹ اوپن ہی ہوتی ہے۔ اسی طرح مکان کی تعمیر میں بھی اس بات کا خیال رکھا جاتاہے کہ وہ ویسٹ اوپن ہو، تاکہ گرمیوں کی شاموں میں ٹھنڈی ہوائوں سے لطف اندوز ہوسکیں۔ 

اسی لیے مکان کی تعمیر کے وقت آپ اور آرکیٹیکٹ کو اس بات کا خیال رکھنا ہوگا کہ مکان کا ڈیزائن یا تعمیر اس طرح ہو کہ موسم گرما کے گرم ترین دن بھی آرام سے گزر جائیں۔ اس ضمن میں کچھ مشورے ذیل میں پیش کیے جارہے ہیں۔

مکان کی بنیاد

اپنے گھر کی بنیادیں مشرق سے مغرب کی سمت میں رکھیں تاکہ سورج طلوع اور غروب ہوتے وقت اس کی شعاعیں براہ راست آپ کے مکان پر نہ پڑیںاور مکان کا سامنا کچھ حد تک ٹھنڈی ہوا سے ہو۔ اپنے صحن (پیٹیوز) ا ور ڈیک شمال کی سمت بنائیں اور اگر ان پر سایہ فراہم کیا جائے تو زیادہ بہتر رہے گا۔

درجہ حرارت میں تبدیلی

کنکریٹ، اینٹیں، ٹائلز اور پلاسٹر بہت بڑی مقدار میں حرارت کو جذب کرتےہیں اور آہستہ آہستہ گرمی کی حدت کو باہر نکالتے ہیں۔ اسی وجہ سے صبح سے رات تک گھر کا درجہ حرارت اتار چڑھائو کا شکار رہتاہے۔ گرم مرطوب آب و ہو ا میں حرارت سارا دن جذب ہوتی رہی ہے اور جب رات میں باہر کا درجہ حرارت کم ہوتاہے تو یہ گھر میں ریلیز ہوتی رہتی ہے۔ یہ حرارت جذب کرنے والے مٹیریل جب دن میں حرارت جذب کرلیں تو رات میں درجہ حرارت گرنے پرکھڑکیاں کھول دیں تاکہ ان کی جذب کی ہوئی حرارت باہر چلی جائے۔

انسولیشن

فرش اور دیواروں کی انسولیشن گرمی کو کم کرسکتی ہے۔ انسولیشن کی چار عام اقسام ہیں جو آپ کے گھر میں گرمی کی شدت میں کمی لاسکتی ہیں:

اسپرے فوم انسولیشن : اس قسم کی انسولیشن اسپرے ہولڈ ر کی مدد سے گھرکے مخصوص مقامات پر کی جاتی ہے۔ اسے لگانے کی بہترین جگہیں نئی تعمیر کی گئی دیواروں کے خلا، غیر مکمل چھت یا پھر پہلے سے موجود دیواریں ہوتی ہیں۔

فائبر گلاس انسولیشن : انسولیشن کی یہ سب سے عام قسم ہے جو رخنوں یا خالی جگہوں میں لگائی جاتی ہے۔ اس کی سب سے بڑی خصوصیت ہے کہ یہ نہ صرف سستی بلکہ لگانے میں بھی سب سے آسان ہوتی ہے۔ اس کے ساتھ ساتھ اس انسولیشن سے آپ کاگھر متاثرنہیں ہوتا۔ ا س میں آگ نہیں لگتی اور آپ کا گھر محفوظ رہتاہے۔ اسی لیے زیادہ تر لوگ فائبر گلاس انسولیشن کو ترجیح دیتے ہیں۔

منرل وول انسولیشن : اسے روک وول انسولیشن بھی کہتے ہیں۔ یہ بھی فائبر گلاس کی طرح ہوتی ہے ا ور لگانے میں بھی آسان ہے۔ یہ تھیلوں میں آتی ہے اور تھیلوںسے مخصوص جگہوں پر براہ راست انڈیل دی جاتی ہے۔ یہ انسولیشن بلند درجہ حرارت کو بھی برداشت کرتی ہے یہاں تک کہ انولیشن کی دیگر اقسام کے مقابلے میں 1000 ڈگری درجہ حرارت کو بھی برداشت کرلیتی ہے۔ ا  مٹیریل سے انسولیشن کےبعد گھر بھی سائونڈ پروف رہتاہے۔

سیلولوز انسولیشن : اگر آپ اپنے گھر کی انسولیشن کیلئے اورگینک طریقہ ڈھونڈ رہے ہیں تو سیلولوز انسولیشن آپ کیلئے بہترین انتخاب ہے۔ اس قسم کی انسولیشن زیادہ تر ری سائیکل کیے گئے کاغذوں، خاص طورپر اخبارات اور کبھی کبھار کارڈبورڈ اور دیگر اقسام کے کاغذوں سے کی جاتی ہے۔ یہ مٹیریل پھر کیمیکلزکے ذریعے انسولیشن میں ڈھالا جاتاہے اور یہ انسولیشن گھر کو نمی، گرمی اور کیڑے مکوڑوں سے محفوظ رکھتی ہے۔

منعکس کرنے والی چھت

چھت کو ایسے مٹیریل سے بنائیں جو سورج کی شعاعوں کو جذب کرنے بجائے انہیں منعکس کردے۔ اس کیلئے آپ اپنے گھر کی چھت کو وائٹ میٹل یا وائٹ کنکریٹ ٹائلز سے تیار کرواسکتے ہیں۔ اگر گھر کی چھت پر اس قسم کا انتظام نہ ہو تو اس پر بالا خانہ بنانے یا شیٹ کا سائبان بنانے کی کوشش کریںتاکہ چھت پر سایہ رہے اور اسےبراہ راست حرارت جذب نہ کرنا پڑے۔

سایہ دار کھڑکیاں

کوشش کریں کہ کھڑکیاں ایسی بنوائیں جن پر سایہ ہو۔ یہ سایہ قدرتی بھی ہوسکتا ہے، نہیں تو ان پر چھجے بنوالیں تاکہ دھوپ براہ راست کھڑکیوں سے اند ر نہ آئے۔ کوشش کریں کہ کھڑکیاں شمال جنوب کی طرف بنوائیں تاکہ صبح اور شام کے وقت دھوپ اندر نہ آئے۔

ہوا بند تعمیر

مکان کی تعمیر میں اگر بڑے بڑے رخنے یا خلا ہوں گے تو گرم ہوائیں اور دھوپ بڑی مقدارمیں اندر آئے گی۔ اس طرح ایئر کنڈیشنرز پر بوجھ پڑے گا اور وہ زیادہ بجلی استعمال کریں گے جس سے بل بھی زیادہ آئے گا۔ ایک مرطوب آب وہوا میں موجود نمی بھی گھر کے دھاتی مٹیریلز کیلئے نقصان دہ ہوتی ہے اور ا س کیلئے بھی انتظامات کرنے کی ضرورت ہوتی ہے۔

وینٹی لیشن

روشن دانوں یعنی وینٹی لیشن کی دو صورتیں ہیںکہ اگر آپ کا گھر سرد علاقے میں ہے تو وینٹی لیشن ایسی ہوکہ سرد ہوا باہر جائے اور گرم ہوا اند ر آئے۔ تاہم، اگر آپ کا گھر گرم مرطوب علاقے میں ہے تو ایئر کنڈشننگ سسٹم اس کے برعکس ہو۔اس سلسلے میں وینٹی لیشن کی کئی اقسام میں سے چند ایک کا انتخاب آپ کرسکتےہیں:

باکس وینٹ  (Box Vent) : ڈبے نما اس وینٹ کے حصے حرکت نہیں کرتے بلکہ ایک جگہ فکس رہتے ہیں۔یہ دراصل چھت میں بنے سوراخ پر فکس کردیے جاتے ہیں۔ باکس وینٹ کو ڈبے کی طرح کھول بھی سکتے ہیں اور بند بھی کرسکتے ہیں۔

ونڈ ٹربائن وینٹ(Wind Turbine) : اس کے حصے گھومنے والے یا حرکت کرنے والے ہوتے ہیں، یہ بجلی کے بجائے ہوا سے حرکت کرتے ہیں۔ اگر ہوا تیزاور مستقل چل رہی ہوتو ونڈٹربائن وینٹ زبردست کام کرتاہے اور گھر سے زیادہ گرم ہوا باہر پھینکتا ہے ۔

رِج وینٹ (Ridge Vent) : یہ بھی فکس ہوتاہے اوراس کے حصے حرکت نہیں کرتے ۔ ونڈ ٹربائن یا باکس وینٹ کے برخلاف یہ بہت لمبے اورعمودی انداز میں لگائے جاتے ہیں۔ انہیں لگانا مشکل ہوتا ہے ،لیکن اگر یہ درست تناسب میں لگ جائیں توآپ کیلئے بہترین ہیں۔

پاور وینٹ(Power Vent) : یہ بجلی سےچلتا ہے اورآپ کے گھرسے گرم ہوا باہر پھینکنے کیلئے اپنے بڑے پنکھوںپر انحصار کرتا ہے۔ یہ بھی بہت سے رنگوں میں دستیاب ہے تاکہ آپ اپنی چھت کے رنگ سے اس کا امتزاج بنا سکیں ۔

کپولا وینٹ (Cupola Vent) : یہ بہت دلکش دکھائی دیتے ہیں، یہ عموماً آرائشی نقطہ نگاہ سے استعمال میں آتے ہیں ۔ اسے آپ اونچی دیواروں پر تکونی چھت کے دونوں حصوں کے ملنے والی جگہ پر لگا سکتے ہیں ۔