| |
Home Page
جمعہ 27 صفر المظفر 1439ھ 17 نومبر 2017ء
June 30, 2017 | 12:00 am
کراچی جیل انتظامیہ نے سیاسی اسیروں پر عرصہ حیات تنگ کردیا، ندیم نصرت

Todays Print

لندن( جنگ نیوز) متحدہ قومی موومنٹ لندن کے کنوینر ندیم نصرت نے سینٹرل جیل کراچی میں جیل انتظامیہ کے مہاجردشمن طرزعمل، سیاسی اسیروں کو بنیادی حقوق سے محروم کرنے اورجیل مینوئل کی سنگین خلاف ورزی کی سخت ترین الفاظ میں مذمت کی ہے ۔ ندیم نصرت نے کہاکہ سینٹرل جیل کراچی میں ملاقات کیلئے اسیروں کے اہل خانہ سے رشوت لینے ،جیل مینوئل اورقیدیوں کے انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کا سلسلہ کوئی نئی بات نہیں ہے لیکن گزشتہ دنوں جوڈیشل کمپلیکس ،سینٹرل جیل سے کالعدم لشکرجھنگوی کے دو دہشت گردوں کے فرارکے بعد جیل انتظامیہ نے سیاسی اسیروں پر عرصہ حیات تنگ کردیاہے ۔ انہوں نے کہاکہ اس واقعہ کے بعد جیل میں آپریشن کرکے قیدیوں کو نہ صرف بیرکوں تک محدود کردیاگیا ہے بلکہ انہیں روزمرہ استعمال کی اشیاء تک سے محروم کردیاگیاہے ۔ جیل انتظامیہ نے سیاسی اسیروں کی ماڑی پرکرائی جانے والی ملاقاتوں پر پابندی عائد کردی ہے، اسیروں کو 23 گھنٹے بیرکوں میں قیدرکھاجارہا ہے ، جس کے باعث قیدیوں کو پینے کیلئے واش روم کا پانی استعمال کرناپڑتا ہے جبکہ عید کے موقع پراہل خانہ کی جانب سے قیدیوں کیلئے لائے گئے کپڑے اورراشن وغیرہ تک واپس کئے جارہے ہیں جس کی جتنی بھی مذمت کی جائے کم ہے ۔انہوں نے مزید کہاکہ اگر کالعدم لشکرجھنگوی کے جہادی دہشت گرد جیل سے فرارہوئے ہیں تو اس میں سینٹرل جیل کراچی کے قیدیوں کا کیاقصور ہے؟ دہشت گردوں کی مددکرنے والے جیل انتظامیہ کے حکام کے خلاف کارروائی کرنے کے بجائے قیدیوں بالخصوص سیاسی قیدیوں کے انسانی حقوق کیوں پامال کئے جارہے ہیں ؟یہ سراسر زیادتی اور ظلم ہے۔ ندیم نصرت نے سندھ حکومت سے مطالبہ کیاکہ سینٹرل جیل کراچی میں سیاسی اسیروں کے ساتھ ظالمانہ اورمتعصبانہ سلوک بند کیاجائے ، قیدیوں کی ملاقات اورانہیں راشن وغیرہ پہنچانے پر عائد پابندی فی الفورختم کرائی جائے اورسیاسی قیدیوں کے انسانی حقوق کی پامالی کا سلسلہ بندکرایاجائے ۔انہوں نے انسانی حقوق کی تنظیموں سے اپیل کی کہ سینٹرل جیل کراچی میں اسیروں کے انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کا فوری نوٹس لیاجائے اور اسکے خلاف صدائے احتجاج بلند کی جائے۔