اگلی حکومت کا بڑا چیلنج غیر ملکی قرضوں کی ادائیگی ہے،شمشاد اختر

July 11, 2018
 

نگراں وفاقی وزیر خزانہ شمشاد اختر نے کہا ہے کہ اگلی حکومت کے لئے سب سے بڑا چیلنج غیر ملکی قرضوں کی ادائیگی ہوں گی۔

اسلام آباد میں سرکاری قرضوں کے موضوع پر سیمینار سے اظہار خیال کرتے ہوئے شمشاد اختر نے کہا کہ پاکستان کے ذمے اندرونی اور بیرونی قرضوں کا حجم 24.5 ٹریلین روپے ہے۔

انہوں نے کہا کہ موجودہ معاشی صورت حال کوسنبھالنے کیلئے ذمےدارقیادت کی ضرورت ہے،30 جون تک پاکستان کے قرضے جی ڈی پی کے 72 فیصد تک پہنچ گئے۔

وفاقی وزیر خزانہ نے کہا کہ قانون کے مطابق قرضوں کا حجم جی ڈی پی کے 60 فیصد تک ہونے چاہیںجبکہ مجموعی قرضوں کا حجم قانونی حد سے 12 سے 14 فیصد اوپرچلا گیاہے۔

ان کا مزید کہناتھاکہ قرضے مئی تک 16.5 ٹریلین روپے تک پہنچ گئے،بیرونی قرضوں اورواجبات کا حجم 92.2 ارب ڈالر تک پہنچ گیا،قرضوں میں اضافے کی ایک وجہ غیرذمے داراورکمزورمعاشی منصوبہ بندی ہے۔

شمشاد اختر نے یہ بھی کہا کہ قرضوں میں اضافے کی ایک وجہ غیر ذمے دار اور کمزور معاشی منصوبہ بندی ہے، عالمی سطح پر شرح سود بڑھنے سے پاکستان کے لیے مشکلات پیدا ہوں گی۔


مکمل خبر پڑھیں