آپ آف لائن ہیں
جنگ ای پیپر
بدھ19؍ ذوالحجہ 1440ھ 21؍اگست 2019ء
Namaz Timing
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

پولیس نے کراچی کے علاقے ڈیفنس میں اینکر مرید عباس سمیت دہرے قتل کی ابتدائی تفتیشی رپورٹ تیار کر لی ہے۔

رپورٹ میں مقتول مرید عباس کی بیوہ زارا عباس اور ملزم عاطف زمان سمیت 6 افراد کے ریکارڈ کیے گئے بیان کی تفصیل موجود ہے۔

مرید عباس قتل: حساب کتاب کی ڈائری پولیس کے حوالے

کراچی کے علاقے ڈیفنس میں اینکر مرید عباس اور اس کے...

حاصل ہونے والی ابتدائی تفتیشی رپورٹ کے مطابق پولیس کو مرید عباس کی اہلیہ زارا عباس نے بیان دیا ہے کہ مقتول مرید عباس اور خضر کا عاطف زمان سے پیسے کے لین دین پر تنازع تھا اور واقعے کے روز 8 بج کر 4 منٹ پر مرید نے فون پر بتایا کہ عاطف نے 50 لاکھ دینے کے لیے بلایا ہے۔

انہوں نے بیان میں مزید کہا ہے کہ 8 بج کر 38 منٹ پر مرید کے دوست عمر ریحان کی بیوی کی مجھے کال آئی اور عمر کی بیوی نے بتایا کہ عاطف نے مرید کو فائرنگ کر کے زخمی کر دیا ہے۔

زارا عباس نے یہ بھی بتایا ہے کہ وہ اپنے والد کے ہمراہ عاطف زمان کے دفتر پہنچیں، دفتر کی دوسری منزل پر مرید زخمی حالت میں تھے، اسپتال پہنچنے پر پتہ چلا کہ عاطف نے خضر کو بھی فائرنگ کر کے زخمی کر دیا ہے۔

تفتیشی ٹیم نے اس واقعے سے جڑے ہوئے مزید افراد عدنان مصطفیٰ، عمر ریحان، اسامہ احمد، عبدالحلیم اور عاطف زمان کا اسپتال میں بیان ریکارڈ کر لیا ہے۔

ابتدائی رپورٹ میں عاطف زمان کی جانب سے پولیس کو بتایا گیا ہے کہ اس نے واقعے کے روز خضر حیات کو فون کر کے ڈیفنس میں خیابانِ بخاری بلایا تھا، خضر حیات اپنی کار میں خیابانِ بخاری پہنچا۔

عاطف نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ میں نے خضر کو اپنے بھائی عادل زمان کے پستول سے فائرنگ کر کے قتل کیا اور اسی پستول سے فائرنگ کر کے مرید کو بھی قتل کیا، فائرنگ کے وقت عادل زمان ساتھ موجود تھا۔

ملزم عاطف کا مزید کہنا ہے کہ عادل زمان موقع سے فرار ہو گیا اور میں گھر آ گیا، میں نے گھر آ کر خود کو بھی اسی پستول سے گولی مار لی۔

اس مقدمے میں ملوث دیگر ملزمان عادل زمان اور چوہدری ندیم مفرور ہیں، ان ملزمان کی گرفتاری کے لیے پولیس کی جانب سے چھاپے مارے جا رہے ہیں۔

مقدمے کی تفتیشی ٹیم نے کیس کی یہ ابتدائی رپورٹ اعلیٰ افسران کو بھجوا دی ہے۔

قومی خبریں سے مزید