آپ آف لائن ہیں
جنگ ای پیپر
اتوار30؍جمادی الاوّل 1441ھ 26؍جنوری 2020ء
Namaz Timing
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
تازہ ترین
آج کا اخبار
کالمز

تشنج کیخلاف مہم، دوسرے مرحلے میں 5 لاکھ خواتین کی ویکسی نیشن کی جائے گی

کوئٹہ (اسٹاف رپورٹر) ضلعی ناظم صحت ڈاکٹر سعید احمد میروانی نے کہا ہے کہ 9 دسمبرسے کوئٹہ سمیت بلوچستان بھر میں تشنج کے خلاف شروع ہونے والی حفاظتی ٹیکوں کی دوسری چھ روز مہم کے دوران پانچ لاکھ سے زائد خواتین کو حفاظتی ٹیکے لگائے جائیں گے ۔حفاظتی ٹیکہ جات روزانہ کی بنیاد پر مراکز صحت میں لگائے جاتے ہیں کیونکہ شعور و آگاہی کی کمی کے باعث بلوچستان بھر میں خواتین تک رسائی کا واحد ذریعہ خصوصی مہم ہیں ۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے ہفتہ کو کوئٹہ پریس کلب میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کیا ، اس موقع پر ڈسٹرکٹ فوکل پرسن محکمہ صحت غلام سرور ، ڈسٹرکٹ کوآرڈی نیٹر یونیسف کوئٹہ ارشاد احمد لہڑی ، عابد کاسی ، نعمان بشیر ، بلال مینگل سمیت دیگر بھی موجود تھے ۔ ڈاکٹر سعید میروانی نے کہا کہ ضلع کوئٹہ میں 9 سے 14 دسمبر تک ایم این ٹی آئی پروگرام چھ روز تک جاری رہے گا اس دوران پندرہ سال سے 49 سال کی عمر کی بچیوں اور خواتین کو تشنج سے بچاؤ کے حفاظتی ٹیکے لگائے جائیں گے ۔ اس سلسلے میں ضلع کوئٹہ کو پچاس یونین کونسلز میں تقسیم کیا گیا ہے اور پچاس میڈیکل افسران کی نگرانی میں 636 ٹیمیں تشکیل دی گئی ہیں جو گرلز ہائی اسکولز ، گرلز کالجز ، یونیورسٹیز ، خواتین کی دستکاری کے اداروں سمیت گھر گھر جاکر خواتین کو حفاظتی ٹیکے لگائیں گی ۔ انہوں نے

کہا کہ مہم کو کامیاب بنانے کیلئے ضلعی انتظامیہ ، اراکین قومی و صوبائی اسمبلی ، علماء کرام ، سماجی کارکن ، صحافیوں اور تمام مکتبہ فکر سے تعلق رکھنے والے افراد محکمہ صحت کی ٹیموں کے ساتھ تعاون کریں تاکہ جان لیوا بیماری کا تدارک ممکن ہو ۔ ایک سوال پر انہوں نے کہا کہ تشنج سے بچاؤ کی پہلی مہم کے دوران تین لاکھ سے زائد خواتین کو حفاظتی ٹیکے لگائے گئے اس مہم میں جو باقی رہ گئے ان کیلئے دوبارہ مہم شروع کی جائے گی جبکہ تیسری مہم جون 2020ء میں ہوگی ۔

کوئٹہ سے مزید