• بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

خیبر پختونخوا بورڈ کے نتائج میں طلبہ کے ریکارڈ توڑ نمبرز کی تحقیقات کا فیصلہ


خیبرپختونخوا حکومت نے تعلیمی بورڈز کی جانب سے طلباء کے 1090 سے زیادہ نمبرز حاصل کرنے کے معاملے کی انکوائری کرانے کا فیصلہ کیا ہے۔

محکمہ تعلیم نے معاملے کی تحقیقات کے لیے آٹھ رکنی کمیٹی قائم کردی ہے۔

خیبرپختونخوا کے تعلیمی بورڈز نے انٹر اور میٹرک نتائج کا اعلان کیا، جس میں طلباء کو 1100 میں سے 1100 نمبرز بھی دیے گئے، تعلیمی بورڈز کے نتائج سوشل میڈیا پر تنقید کا نشانہ بنے۔

نجی تعلیمی اداروں کو اے پلس گریڈز دیے گئے جبکہ درجنوں سرکاری اسکولوں اور کالجوں کے طلباء نے 1100میں سے 400 اور 500 کے درمیان نمبرز حاصل کیے۔

محکمہ تعلیم کے اعلامیہ کے مطابق میٹرک اور انٹر کے امتحانات میں 1090 سے زیادہ نمبرز لینے والے طلباء کے پیپرز دوبارہ چیک کیے جائیں گے اور ان طلباء کا موجودہ اور پچھلا مارکس ریکارڈ بھی چیک کیا جائے گا۔

اعلامیہ کے مطابق کمیٹی تعلیمی بورڈز کی پالیسی کے تحت پیپرز کی چیکنگ کے معیار کا بھی جائزہ لے گی۔

قومی خبریں سے مزید