آپ آف لائن ہیں
بدھ7؍رمضان المبارک 1439ھ 23؍مئی2018ء
Namaz Timing
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
Karachi Honour Killing Authorities Exhume Couples Bodies For Examination

کراچی میں پسند کی شادی کی خواہش جرم بن گئی، جرگے کے حکم پر کرنٹ لگا کر قتل کیے گئے لڑکے اور لڑکی کی قبر کشائی کے بعد نمونے حاصل کرلیے گئے ہیں۔

پولیس کا کہنا ہے کہ نوجوان لڑکے اور لڑکی کو ان کے والد اور چچاؤں نے کرنٹ لگا کر قتل کیا تھا۔

x
Advertisement

ابراہیم حیدری کے علی گوٹھ میں 14 اگست کے روز اٹھارہ سالہ غنی الرحمان اور سترہ سالہ دختر بجا گھر سے بھاگ کر حیدر آباد چلے گئے تھے تاہم 15 اگست کو دونوں کو جرگے کے فیصلے پر کرنٹ لگا کر قتل کر دیا گیا۔

عدالت کے حکم پر فارنسک ماہرین نے مجسٹریٹ کی موجودگی میں قبر کشائی کی، جس میں پولیس سرجن اعجاز کھوکر، خاتون ایم ایل او سمیعہ سعید، ڈاکٹر فتح مرزا اور ڈاکٹر قرار عباس شامل تھے۔

ڈاکٹر قرار عباس کا میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہنا ہے کہ لڑکی اور لڑکے کی لاشوں پر تشدد اور ہیوی کرنٹ کے نشانات ملے ہیں، لڑکے کے سر پر تشدد اور لڑکی کے کاندھوں اور پیروں پر نشانات ہیں۔

انہوں نے مزید وضاحت کرتے ہوئے کہا کہ لڑکی کے ہاتھ پر کرنٹ کا نشان واضح ہےجبکہ لڑکے کے سینے اور ہاتھ پر بھی تیز کرنٹ لگایا گیا تھا۔

انہوں نے مطالبہ کیا ہے کہ یہ تفتیش بھی کی جائے کہ کہیں زہر تو نہیں دیا گیا۔

پولیس کے مطابق جرگے کا سربراہ سرتاج اسلام آباد فرار ہوگیا ہے جس کی گرفتاری کے لیے چھاپے مارے جارہے ہیں۔

​​
Chatاپنی رائے سے آگاہ کریں