آپ آف لائن ہیں
منگل14؍ محرم الحرام 1440 ھ25؍ستمبر 2018ء
Namaz Timing
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

امریکی جریدہ ’’ فوربس‘‘ نے سالانہ فہرست جاری کی ہے اس میںجن ارب پتیوں کی نشاندہی کی گئی ہے ان کی تعداد اب1000سے تجاوز کرکے1125ہوگئی ہے متمول ترین افراد کا یہ گروپ ساری دنیا کی 5.4ٹریلین (کھرب) ڈالرز پرقابض ہے۔ ان میں سے بیشتر امریکہ سے تعلق رکھتے ہیں جبکہ خواتین کے پاس ’’پتی‘‘ ہوں نہ ہوں مگر 81خواتین ایسی ہیں جو ارب پتی ہیں۔ 1125ارب پتیوں میں 513ایسے ہیں جو اپنی محنت کے بل بوتے پر اس دولت کے مالک بنے ہیں ان میں سے تین درجنکے لگ بھگ افراد ہائی اسکول کی تعلیم تک حاصل نہیں کرسکے۔ امریکی سرمایہ دار وارن بفٹ نے مائیکرو سافٹ ویئر کے سربراہ بل گیٹس سے کرہ ارض کے دولتمند ترین شخص کا خطاب چھین لیا ہے وارن بفٹ ایک سرمایہ کار اور مختلف کمپنیوں میں اپنا سرمایہ لگاتا ہے، کچھ عرصہ قبل وارن بفٹ نے37ارب ڈالر یعنی اپنی دولت کا 85فیصد خیراتی کاموں کیلئے دینے کا اعلان کیا تھا (اب آپ خود اندازہ لگایئے کہ15فیصد دولت پاس رکھنے پر بھی دنیا کا امیر ترین شخص ٹھہرا اور اگر یہ بندہ خدا ساری دولت اپنے پاس رکھتا تودنیا کا کیا حشر ہوتا) اس طرح ماسکو آج کل دنیا کے ارب پتیوں کا دارلحکومت بن گیا ہے یوں سمجھ لیجئے کہ یہاں قد م قدم پر ارب پتی بستے ہیں یا بقول شخصے کہیں سے اینٹ اکھاڑ ئیے تو نیچے سے ارب پتی نکل آتا ہے یہی وجہ ہے کہ دنیا کے

سرکردہ ارب پتی افراد میں شامل89 افراد جن کا خزانہ اوسطً 6.1بلین ڈالر ہے روسی دارالحکومت ماسکو میں مقیم ہیں یا یوں سمجھئے کہ ماسکو نے نیو یارک کی جگہ سنبھال لی ہے۔فوربس میگزین کی رپورٹ کے مطابق امریکہ 495، روس 85اور جرمنی 59کے بعد ہمارے ’’دشمن‘‘ بھارت کے پاس سب سے زیادہ ارب پتی ہیں۔ اس کے علاوہ لندن 38ارب پتی، استنبول 34ہانگ کانگ 30ارب پتی افراد کے ساتھ جی رہا ہے۔ دنیا کے دس امیر ترین افراد کی فہرست میں شامل فوربس جریدہ کے مطابق امریکہ کے دو، بھارت کے چار، لاطینی امریکہ، سویڈن، جرمنی اور روس کا ایک ایک سرمایہ دار سرفہرست ہے۔ وارن بوفیٹ یا بفٹ کے بعد دوسرا نمبر کارلوس سالم کا ہے اس کے اثاثوں کی کل ملکیت 60ارب ڈالر سے زیادہ ہے۔ کارلوس میکسیکو کا رہنے والا ہے لیکن یہ لبنان سے ہجرت کرکے میکسیکو آنے والے ایک تاجر کا بیٹا ہے، اس نے اپنی کاروباری زندگی کا آغاز پراپرٹی ڈیلر کے طور پر کیا تھا۔ جس کے بعد اس نے حصص کا کاروبار شروع کردیا اور پھر ٹیلی کام کے شعبے میں آگیا اس کے بعد تیسرے نمبر پر آتا ہے بل گیٹس۔ جس کے بارے میں آج ہم بات کریں گے۔دنیا کے سب سے پہلے سوفٹ وئیر کے بانی چیئرمین بل گیٹس کے نام سے شاید ہی کوئی پڑھا لکھا واقف نہ ہو ۔ وہ 2012سے 2017تک دنیا کا امیرترین آدمی رہا ہے لیکن جیسا کہ میں نے پہلے بتایا گزشتہ سال کے اواخر میں یہ اعزاز میکسیکو کے کارلوس سالم یا مسلم نےاپنے نام کرلیا۔ لیکن کاروباری دنیا میں جس تیزی سے اتار چڑھائو آرہے ہیں اس کے پیش نظر مجھے یقین ہے کہ یہ جوان بہت جلد دوبارہ یہ اعزاز حاصل کرلے گا ۔ بل گیٹس کی دولت کا اندازہ 58بلین ڈالر لگایا گیا ہے جس میں ہر گزرتے لمحے کے ساتھ اضافہ ہورہا ہے۔ بل گیٹس کی دولت کے بارے میں آج یہاں چند دلچسپ باتیں پیش کررہا ہوں جن سے میرے حساب کے مطابق بہت سے قارئین ناواقف ہوں گے۔ہر گزرتا سکینڈ بل گیٹس کی دولت میں250ڈالر کا اضافہ کررہا ہے اس کا مطلب یہ ٹھہرا کہ یہ شخص ہر روز 21.6ملین ڈالر کماتا ہے۔اگر بل گیٹس کے ہاتھ سے ایک ہزار ڈالر کا نوٹ گر جائے تو اسے اٹھانے کی قطعی ضرورت نہیں ہے کہ نوٹ اٹھانے میں اسے چار سکینڈ لگیں گے اور اس دوران وہ ایک ہزار ڈالر کما چکا ہوگا۔امریکہ اس وقت 7.3ٹریلین ڈالر کا مقروض ہے اگر بل گیٹس اکیلے ہی اپنے ملک کا قرض چکانے پر آجائے تو ایسا کرنے میں اس کو دس سال بھی نہیں لگیں گے۔ دنیا کے ہر باشندے کو 15ڈالر دینے کے بعد بھی اس کے پاس 5ملین ڈالر بچ جائیں گے مشہور امریکی باسکٹ بال کھلاڑی مائیکل جارڈن کی سالانہ آمدنی30ملین ڈالر ہے اگر وہ ایک ڈالر بھی خرچ نہ کرے تب بھی اسے بل گیٹس جتنا امیر اور دولت مند بننے میں277برس لگ جائیں گے۔اگر بل گیٹس کو بذات خود ایک ملک تصور کرلیا جائے تو دنیا کے امیر ترین ممالک میں اس کا نمبر 35واں ہوگا۔اگر بل گیٹس کی تمام دولت کو ایک ڈالر کے نوٹوں میں تبدیل کرلیا جائے تو انہیں ایک جگہ سے دوسری جگہ منتقل کرنے کیلئے 713بوئنگ طیارے استعمال ہوں گے اور اگر ان نوٹوں کو لمبائی میں ترتیب دیا جائے تو ان کی لمبائی زمین اور چاند کے درمیانی فاصلے سے14گنا زیادہ ہوگی۔ 28اکتوبر 2018کو بل گیٹس63برس کا ہوجائے گا اگر وہ مزید35برس زندہ رہا اور اس عرصہ میں وہ اپنی دولت خرچ کرنا چاہے تو اسے روزانہ 679ملین ڈالر خرچ کرنے پڑیں گے۔اگر مائیکرو سافٹ ونڈوز کے یوزر کو ہر بار کمپیوٹر ہینگ ہونے پر ایک ڈالر جرمانہ ادا کرنا پڑے تو دنیا کا یہ دوسرا امیرترین شخص صرف تین سال میں قلاش ہوجائے یہ ہے بل گیٹس، جوا ٓج قارون کے خزانے پانے کے باوجود اپنی ماں سے بے حد محبت کرتا ہے جبکہ اسے وفات پائے کئی برس ہوچکے ہیں، عمران خان کی طرح دوسروں سے حاصل ہوئی دولت سے ماں کے نام پر اسپتال تو تعمیر نہیں کیا البتہ اپنی دولت سے ایک ارب ڈالر کا سرمایہ ماں کے نام پر خیراتی کاموں میں صرف کرچکا ہے اور ہر سال اسکا اعادہ کرتا ہے۔ وہ آج بھی اپنے آپ کو’’عام شہری‘‘ کہتا ہے۔
’’تری وفا کا خدا سلسلہ دراز کرے‘‘
(کالم نگار کے نام کیساتھ ایس ایم ایس اور واٹس ایپ رائےدیں00923004647998)

Chatاپنی رائے سے آگاہ کریں