آپ آف لائن ہیں
جنگ ای پیپر
جمعرات27 ؍جمادی الاوّل 1441ھ 23؍جنوری 2020ء
Namaz Timing
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
تازہ ترین
آج کا اخبار
کالمز

ڈوپنگ ڈیٹا میں ردوبدل، روس کھیلوں کے مقابلے سے چار سال کے لیے باہر

ڈوپنگ ڈیٹا میں ردوبدل، روس کھیلوں کے مقابلے سے چار سال کے لیے باہر


ورلڈ اینٹی ڈوپنگ ایجنسی نے روس پر چار سال کے لیے کسی بھی اسپورٹس میں حصہ لینے پر پابندی لگادی ہے، جس کے بعد روس قطر ورلڈ کپ فٹبال سمیت کئی اہم اسپورٹس ایونٹ سے باہر ہوگیا ہے۔

بتایا جاتا ہے کہ اس سال جنوری میں روس نے ڈوپنگ کے حوالے سے جو ڈیٹا دیا تھا اس میں ردوبدل کیا گیا، تحقیقات کے بعد ورلڈ اینٹی ڈوپنگ ایجنسی نے روس کی ڈوپنگ ایجنسی پر شکوک کا اظہار کیا تھا۔

واڈا کی ایگزیکٹو کمیٹی نے لوزان (سوئٹزرلینڈ) میں ہونے والی میٹنگ میں رشین ڈوپنگ ایجنسی کی جانب سے جعلی شواہد دینے اور ڈیٹا ضائع کرنے پر  روس پر چار سال کے لیے پابندی لگادی۔

پابندی کے دوران روس کسی بھی اسپورٹس ایونٹ میں حصہ نہیں لے سکے گا۔

پابندی کا اطلاق صرف اسپورٹس ایونٹ میں شرکت کرنے تک محدود نہیں ہے بلکہ روسی سرکاری اہلکار اسپورٹس کے حوالےسے کسی بھی بڑے ایونٹ کے اجلاس میں شریک نہیں ہوسکیں گے، اور روس نہ تو کسی اجلاس کی میزبانی کرسکے گا اور نہ ہی کسی ٹورنامنٹ کی بڈ (بولی)  کرسکے گا۔

پابندی کے بعد روس کا دستہ اولمپکس 2020  کے ٹوکیو اولمپک سے بھی باہر ہوگیا ہے، جبکہ روس ٹیم ایونٹ میں بھی شرکت نہیں کرسکے گا۔ روس کی ٹیم قطر فٹبال ورلڈ کپ 2022 سے باہر ہوگئی، جبکہ ساتھ ہی ساتھ بیجنگ کے سرمائی اولمپکس 2022 میں بھی روسی ٹیمیں حصہ نہیں لے سکیں گی۔

پابندی کے تحت روس کی ان مرد و خواتین کھلاڑیوں کو آئندہ سال کے اولمپکس کے مقابلوں میں شرکت کی اجازت ہوگی جو واڈا کو یہ یقین دہانی کراسکیں کہ وہ روسی سرکاری ڈوپنگ سسٹم کا حصہ نہیں ہیں۔

اس فیصلے کے خلاف روس 21 روز کے اندر کھیلوں کی ثالثی عدالت سے رجوع کرسکتا ہے۔

کھیلوں کی خبریں سے مزید