آپ آف لائن ہیں
جنگ ای پیپر
بدھ یکم رجب المرجب 1441ھ 26؍ فروری 2020ء
Namaz Timing
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
تازہ ترین
آج کا اخبار
کالمز

یہ خبر، کہ پنجاب فوڈ اتھارٹی نے خفیہ اطلاع ملنے پر 80ہزار کلوگرام زائد المیعاد چاکلیٹ اپنے قبضے میں لے لی، اس اعتبار سے حوصلہ افزا ہے کہ غذائی معیار کی جانچ پڑتال پر مامور ہمارے ادارے کسی نہ کسی حد تک فعال ہیں جبکہ مذکورہ خبر میں تشویش کا یہ پہلو بھی مضمر ہے کہ حصول دولت کے جنون میں انسانی صحت کے تقاضے نظرانداز کرنے والوں کی دستبرد سے چاکلیٹ، ٹافیوں سمیت وہ چیزیں بھی محفوظ نہیں جو معصوم بچے استعمال کرتے ہیں۔ باسی، مضر صحت اور ناقص اشیا کا استعمال ہوٹل کے کھانوں کی صورت میں سامنے آئے، بیکریوں کو گندے انڈوں کی فراہمی کے عنوان سے خبروں کا موضوع بنے یا مختلف اشیا میں ملاوٹ کی شکایات کا روپ دھارے، صحت عامہ کے نقطہ نظر سے تشویش کے پہلو رکھتی ہے۔ جعلی دوائوں کی تیاری و فروخت کرنے والے تو واضح طور پر انسانی جانوں کو نقصان پہنچانے کے عمل میں ملوث ہیں۔ انکے سدباب کیلئے متعلقہ سرکاری اداروں میں دیانتدار عملے کی تقرری سے لیکر ضروری تربیت سمیت تمام پہلو توجہ طلب ہیں۔ اب تو بیرون ملک سے آنے والی غذائی اشیا کے بارے میں بھی ایسی باتیں کہی جارہی ہیں جن کے باعث پڑوسی ملک سمیت کئی ممالک کو بعض اقدامات کرنا پڑے ہیں۔ صورتحال متقاضی ہے اس بات کی کہ ہمارے علماکے خطبات، تعلیمی اداروں میں پڑھائی جانے والی کتب و

تعلیمات، سیاسی رہنمائوں کی تقاریر اور سماجی بہبود کی انجمنوں کی سرگرمیاں مل کر ایسی فضا پیدا کریں جس میں کاروباری عناصر اشیا ہی کیلئے نہیں آمدنی کے بارے میں بھی حلال و حرام کی سختی سے تمیز کی ضرورت محسوس کریں جبکہ عام لوگ صارفین کمیٹیوں کی صورت میں منظم ہوکر عوام کی صحتوں اور جانوں سے کھیلنے والوں کی مزاحمت کریں۔ دیہات میں، محلوں میں، کثیر المنزلہ عمارتوں میں ایسے چوپال، کمیٹیاں اور یونینیں آج بھی ہیں جن کو متحرک کرکے خاطر خواہ نتائج حاصل کئے جا سکتے ہیں۔